ہزاروں سکھوں کا بھارت سے علیحدگی کا فیصلہ

علیحدہ وطن کے قیام کیلئے ریفرنڈم پر بھارت پریشان
Nov 05, 2021

بھارت میں سکھوں کے علیحدہ وطن کے قیام کے لیے لندن میں ہونے والے ریفرنڈم میں ہزاروں سکھوں نے بھارت سے علیحدگی کا فیصلہ سنادیا۔

سکھ رہنماؤں کے مطابق تقریباً 30 ہزار افراد نے ریفرنڈم میں حصہ لیا۔ منتظمین کا کہنا تھا کہ بھارتی دباؤ کے باوجود برطانوی حکومت نے ریفرنڈم کی اجازت دی جس پر وہ ان کے شکر گزار ہیں۔

بھارتی سیکرٹری خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ بھارت اور برطانیہ کے قومی سلامتی کے مشیر رواں ماہ کے آخر میں ملاقات کریں گے جس میں برطانیہ میں سرگرم خالصتان کے رہنماؤں کے بارے میں بات کی جائےگی۔

بھارتی سیکرٹری خارجہ کا یہ بیان ایسے وقت سامنے آیا ہے جب 2 روز قبل برطانیہ میں  خالصتان کے حوالے سے ریفرنڈم کا انعقاد کیا گیا تھا۔

ترک نشریاتی ادارے کے مطابق گلاسگو میں  ہونے والی عالمی موسمیاتی کانفرنس کے موقع پر ہونے والی ملاقات میں مودی برطانوی وزیراعظم بورس جانسن کے سامنے پھٹ پڑے اور برطانیہ میں خالصتان پر ہونے والے ریفرنڈم پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا۔

رپورٹ کے مطابق دونوں وزرائے اعظم کے درمیان ہونے والی ملاقات میں تجارت کے معاملات پس منظر میں چلے گئے اور خالصتان  کا موضوع ہی سرفہرست رہا۔

ملاقات میں نریندر مودی نے بورس جانسن کے سامنے خالصتان پر ریفرنڈم کا معاملہ اٹھایا جس کے بعد اتفاق ہوا کہ دونوں کے  قومی سلامتی کے مشیران اس معاملے پر مل کر مسئلے کا جائزہ لیں گے۔

KHALISTAN

london protest

Tabool ads will show in this div