ڈالر کی قیمت میں معمولی اضافہ

اگلے کچھ روز میں ڈالر کی قیمت 165روپے ہوجائے گی
AFGHANISTAN-ECONOMY فوٹو: اے ایف پی

انٹر بینک مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں 5 پیسے کے اضافے کے بعد 170.15 روپے جبکہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت 50 پیسے اضافے کے بعد 171.70 روپے کی سطح پر پہنچ گئی۔

 تجزیہ کار فیضان احمد کے مطابق اگلے کچھ روز میں ڈالر کی قیمت مزید کم ہوگی اور اگلے ایک ماہ میں ڈالر 165 روپے کی سطح پر آجائے گا۔ اُن کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی اور سعودی عرب کا پاکستان کو 4.2 ارب ڈالر کا قرض ملنے سے ڈالر پر دباو میں کافی حد تک کمی آئے گی۔

سعودی عرب نے اکتوبر میں پاکستان کو کرونا وبا کی وجہ سے پیدا ہونے والے معاشی بحران سے نمٹنے اور پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر کو سہارا دینے کے لیے چار ارب 20کروڑ ڈالر دینے کا اعلان کیا گیا تھا جس کے بعد ڈالر کی قیمت میں مسلسل کمی آرہی ہے اور پچھلے کچھ روز میں ڈالر کی قیمت 176.20 روپے سے کم ہوکر 171 روپے کی سطح پر آگئی ہے تاہم آج ڈالر کی قیمت میں 70 پیسے کا اضافہ دیکھا گیا۔

اسکے علاوہ زرمبادلہ کے اسٹیٹ بینک کے پاس زرمبادلہ کے ذخائر 29 اکتوبر کو 17.19 ارب ڈالر تھے جو 22 اکتوبر کو موجود 17.1 ارب ڈالر سے 5.3 کروڑ ڈالر زیادہ ہے۔

اسٹیٹ بینک اور کمرشل بینکوں کے پاس زرمبادلہ کے ذخائر 23.92 ارب ڈالر ہیں جن میں کمرشل بینکوں کے پاس موجود ذخائر 6.72 ارب ڈالر ہیں، زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافے سے بھی ڈالر میں موجودہ دباو میں کمی آئے گی۔

جمعرات انٹرنیشنل اسلامک ٹریڈ فنانس کارپوریشن نے پاکستان کو تجارتی فنانسنگ کے لیے 76.1 کروڑ ڈالر فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے جس کے تحت تیل اور گیس کی درآمد کی جائے گی، ماہرین کا کہنا ہے اس اقدام سے درآمدات پر بوجھ میں کمی آئے گی اور روپے کی قدر مزید مستحکم ہوگی۔

Tabool ads will show in this div