افغان جنگ سے پاکستان براہ راست متاثر ،150 ارب ڈالرکامعاشی نقصان ہوا،معید یوسف

پاکستان نے دہشت گردی کےخلاف جنگ میں قربانیاں دی ہیں

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/11/Moeed-Yousa-Talk-isb-02-11.mp4"][/video]

مشیر قومی سلامتی معید یوسف نے کہا ہے کہ افغانستان جنگ سے پاکستان براہ راست متاثر ہوا اور پاکستان کی معیشت کا150 ارب ڈالر کا نقصان ہوا ہے۔ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیاں دی ہیں۔

منگل کو اسلام آباد میں مشیر قومی سلامتی ڈاکٹر معید یوسف نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ پاکستان کا جغرافیہ بہت اہم ہے لیکن ماضی میں ہم اس جغرافیےسےوہ فائدہ نہیں اٹھاسکے جو اٹھا سکتے تھے۔

افغانستان سےمتعلق انھوں نے کہا کہ پڑوسی ملک میں لوگوں کے پاس ضروریات پوری کرنے کیلئے رقم نہیں ہے اور پاکستان افغانستان میں مستقل امن و استحکام چاہتا ہے۔ دنیا کو چاہئے کہ افغان حکومت سے تعاون کرے۔

خطے کی صورتحال کے حوالے سےانھوں نے کہا کہ سینٹرل ایشیا کے ممالک میں ازبکستان اہم کردار ادا کرتا ہے اور پاکستان اور ازبکستان کی پوزیشن بالکل ایک ہے۔ پاکستان اور ازبکستان نےمشترکہ سکیورٹی کمیشن سے متعلق تاریخی پروٹوکول پر دستخط کئے ہیں اور دونوں ممالک افغانستان میں امن کیلئے مل کرکام کریں گے۔افغانستان کی صورتحال پر پاکستان اور ازبکستان کا مکمل اتفاق ہے۔

اس کےعلاوہ ازبکستان کا ایک وفد بدھ کو طورخم بارڈرکا دورہ کرے گا۔ انھوں نے امید ظاہر کی کہ مستقل امن سے افغانستان روابط کے فروغ کا مرکز بن جائے گا۔

MOEED YOUSAF

Tabool ads will show in this div