درد سے نجات کیلئے سونے کا صحیح طریقہ کیا ہے؟

غلط طریقے سے سونا کمر اور دیگر درد کا باعث
فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی
Sleep and pain فوٹو: اے ایف پی

دن بھر کی تھکاوٹ کے بعد اگر آپ رات سوتے وقت درست طریقے سے نہیں سوتے تو ہوسکتا ہے کہ صبح اٹھنے کے بعد آپ کو کمر، کندھوں اور گردن میں درد محسوس ہو۔

طبی نیند کی معلم اور ویلی سلیپ سینٹر کی صدر لوری لیڈلی نے تنبیہ کی ہے کہ نیند کے دوران غلط طریقے سے سونے سے آپ خود کو نقصان پہنچا سکتے ہیں، جس میں کندھے کی سوزش اور ریڑھ کی ہڈی میں درد سمیت دیگر مسائل شامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ غلط طریقے سے سونے سے عام طور پر گردن کا اکڑنا، کندھوں کی سوزش یا کمر درد کی شکایات سامنے آتی ہیں۔

سونے کے صحیح طریقے

لیڈلی کے مطابق اگر ہو سکے تو اپنے بازوؤں کو اپنے اطراف میں یا اپنی پیٹھ پر رکھ کر سیدھی حالت میں سو جائیں۔ پیٹھ کے بل سونے سے گردن، کندھے اور کمر درد میں کمی ہوتی ہے۔

دوسرا طریقہ یہ ہے کہ آپ اپنی سیدھی یا الٹی طرف سو جائیں۔ سونے کا یہ طریقہ آپ کی ریڑھ کی ہڈی کو اصل حالت میں رکھتا ہے جبکہ گردن، کندھے اور کمر درد میں بھی کمی لاتا ہے۔

تیسرا طریقہ یہ ہے کہ اگر آپ اپنے بازوؤں کو سر کے اوپر رکھ کر سوتے ہیں تو بہتر یہ ہوگا کہ بازوؤں کے اطراف چادر رکھ لیں تاکہ سوتے وقت حرکت برقرار رہے۔ اس طریقے سے سوتے وقت آپ کی حرکت محدود ہو جائے گی اور نقصان کے امکانات کم ہو جائیں گے۔

دباؤ کو کم کرنے کے لیے اپنے گھٹنوں یا گردن کو اونچا کرنے کے لیے تکیے کو مدد کے طور پر استعمال کریں اور ایک مضبوط میٹرس تلاش کریں جو آپ کے جسم کو سہارا دے سکے۔

سونے کے غلط طریقے

اپنے بازو کو اپنے سر کے اوپر یا اپنے کندھے پر لمبے وقت تک رکھ کر سونا تکلیف دہ چوٹوں کا باعث بن سکتا ہے۔ تکیے کے ساتھ سونا جو آپ کی گردن کو عجیب زاویوں پر آرام کرنے دیتا ہے، یا آپ کی ٹانگیں اونچی کر کے سونا بھی غیر آرام دہ حالات کا باعث بن سکتا ہے۔

دوسرا سیدھی حالت میں بیٹھ کر سونے سے بھی سر اور گردن پر چوٹیں لگ سکتی ہیں۔

تیسرا اور سب سے بڑا مسئلہ پیٹ کے بل سونا ہے، جس کے بارے میں لیڈلی کا کہنا ہے کہ اگر ممکن ہو تو اس سے گریز کرنا چاہیے۔

آپ کے پیٹ کے بل سونے سے آپ کی کمر اور گردن پر دباؤ پڑ سکتا ہے اور اس وجہ سے بار بار کروٹ بدلنے سے نیند بھی خراب ہوسکتی ہے۔

SLEEPING

Tabool ads will show in this div