نواز شریف کی لندن میں اہم شخصیت سے خفیہ ملاقاتیں

نواز شریف کا فوری عام انتخابات کا مطالبہ

 کيا لندن میں موجود سابق وزیراعظم نواز شريف سے پھر کوئی ڈيل ہورہی ہے؟، اہم شخصيت نے لندن ميں نواز شریف سے پچھلے 2 ماہ کے دوران 5 خفيہ ملاقاتيں کی ہيں۔ لیگی قائد کی جانب سے اگلے سال مارچ ميں انتخابات کا مطالبہ کيا جارہا ہے۔

معتبر لیگی ذرائع کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شريف سے لندن ميں ايک مرتبہ پھر اہم شخصیات کا خفيہ ملاقاتوں کا سلسلہ شروع ہوچکا ہے، پچھلے 2 ماہ ميں اہم ملکی شخصيت نے ن لیگی قائد سے 5 ملاقاتيں کی ہيں، جس ميں ملکی سیاسی صورتحال کے حوالے سے معاملات پر بات چيت ہوئی ہے اور مختلف آپشنز پر غور کيا گيا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق وزیراعظم نے اہم شخصیت سے ملاقات میں فوری طور پر عام انتخابات کا مطالبہ کيا ہے۔

 ذرائع کے مطابق نواز شريف کے ساتھ ملاقاتوں سے پہلے اعتماد کی فضاء بنانے کیلئے متعلقہ شخصيت نے لندن ميں موجود لیگی رہنماؤں اور شریف خاندان کے افراد سے ملاقاتيں کی تھيں۔ چند ماہ قبل شہباز شريف کو لندن جانے سے روکنے کے بعد اس اعلیٰ شخصيت نے نون ليگ اور نواز شريف سے ملاقاتوں کا سلسلہ شروع کیا۔

ذرائع کے مطابق ابھی تک بات چيت چل رہی ہے اور دونوں اطراف کسی ڈيل تک نہيں پہنچے ہيں، دونوں کے درمیان مستقبل ميں رابطے برقرار رکھنے پر اتفاق ہوا ہے۔

دوسری جانب مسلم لیگ ن کے رہنماء جاوید لطیف نے سماء ٹی وی کے پروگرام ندیم ملک لائیو میں گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف سے ملاقاتوں اور رابطوں کی تصدیق کی۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے اندر اور باہر با اثر لوگ نواز شریف سے رابطے میں ہیں، بااثر لوگوں کے رابطے آج کل زیادہ تیز ہیں۔

جاوید لطیف نے کہا کہ پاکستان کسی کی ضد کا متحمل نہیں ہوسکتا، پاکستان میں مایوسی کے حالات خانہ جنگی کی طرف جاسکتے ہیں۔

Tabool ads will show in this div