وزیراعلیٰ بلوچستان کیخلاف تحریک عدم اعتماد پرووٹنگ کل(پیرکو) ہوگی

حکومتی ناراض اراکین نے جام کمال کیخلاف تحریک جمع کرائی

بلوچستان اسمبلی میں وزیراعلیٰ جام کمال خان کیخلاف تحریک عدم اعتماد پر رائے شماری آج (25 اکتوبر کو) ہوگی۔

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کیخلاف تحریک عدم اعتماد کی قرار داد نمبر 115 پر رائے شماری 25 اکتوبر کو دن 11 بجے ہوگی، جس کیلئے سیکیرٹری اسمبلی کی جانب سے کارروائی کا ایجنڈا جاری کردیا گیا ہے۔

ایجنڈے کے مطابق تحریک عدم اعتماد پر رائے شماری سے قبل اسپیکر صوبائی اسمبلی اراکین کی حاضری کیلئے 5 منٹ تک گھنٹی بجانے کی ہدایت دیں گے، گھنٹیاں بند ہونے کے بعد ایوان کے تمام داخلے دروازے بند کردیئے جائیں گے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق ہر داخلی راستے پر اسمبلی اسٹاف اس وقت تک تعینات رہیں گے جب تک قرارداد پر رائے شماری کا مرحلہ مکمل نہیں ہوجاتا اور اس وقت تک ان راستوں پر کسی کو اندر آنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

جس کے بعد اسپیکر وزیراعلیٰ کیخلاف تحریک عدم اعتماد کی حمایت کرنیوالے اراکین لابی اے میں جاکر اپنے ووٹ باقاعدہ ریکارڈ کرائیں گے۔

مزید جانیے: وزیراعظم وفاقی وزراء کوبلوچستان میں مداخلت سے بازرکھیں، جام کمال 

اراکین اسمبلی اپنے ووٹ ریکارڈ کرانے کے بعد اس وقت تک واپس اسمبلی ہال میں نہیں آئیں گے جب تک اسپیکر کو یہ تسلی نہ ہو کہ قرارداد پر ووٹ کے خوائشمند تمام اراکین اسمبلی نے اپنے ووٹ ریکارڈ کرادیئے ہیں۔

ووٹوں کا مرحلہ مکمل ہونے کے بعد سیکریٹری اسمبلی ڈویژن لسٹ اکٹھا کرکے ووٹوں کی گنتی کریں گے اور نتیجہ اسپیکر کو پیش کریں گے، اس کے بعد اسپیکر سیکریٹری اسمبلی کو ہدایت دیں گے کہ 2 منٹ کیلئے گنٹھیاں بجائی جائیں تاکہ وہ اراکین اسمبلی جو ایوان سے باہر گئے واپس ایوان میں آجائیں۔

اراکین کی واپسی کے بعد گھنٹیاں بجنا بند کردی جائیں گی تب اسپیکر اسمبلی وزیراعلیٰ کیخلاف قرار داد پر ریکارڈ شدہ ووٹوں کے نتیجے کا اعلان کریں گے۔

واضح رہے کہ وزیراعلیٰ جام کمال خان نے اپنے ٹویٹر پیغام میں وزیراعظم عمران خان سے اپیل کی ہے کہ وہ وفاقی وزراء کو بلوچستان کے معاملات میں مداخلت سے باز رکھیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر اپوزیشن ناراض اراکین کے ساتھ مل کر حکومت بناتی ہے تو وہ اپوزیشن میں بیٹھیں گے۔

No Confidence Motion

CM BALOCHISTAN JAM KAMAL KHAN

Tabool ads will show in this div