اسلام آباد:پمزاسپتال کی ایم آرآئی مشینیں خراب،مریض پریشان

انتظامیہ ایم آر آئی کے لیے نجی لیبارٹریز میں مریضوں کو ریفر کردیتی ہے
Oct 23, 2021
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/10/MRI-Issue-In-PIMS-Isb-Pkg-22-10.mp4"][/video]

اسلام آباد کے سب سے بڑے اسپتال پمز کی ایم آر آئی مشینیں ایک سال سے خراب ہیں۔ اسپتال انتظامیہ ایم آر آئی کے لیے نجی لیبارٹریز میں مریضوں کو ریفر کردیتی ہے۔ نجی لیبارٹریز 5 ہزارروپے کے ٹیسٹ کے 12 ہزار سے 14 ہزارروپے لیتے ہیں۔پمز اسپتال کے ڈائریکٹر ڈاکٹر اعجاز نے کہا ہے کہ تمام شعبہ جات کو کہا ہے کہ ایسا کوئی بھی آپریشن پرائیویٹ سیکٹر میں ریفر نہ کیا جائے اور ایسا ہونے کی صورت میں سخت کارروائی کی جائے گی۔ معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا ہے کہ اسپتال کے بورڈ آف گورنرز کا کام یہ ہی ہے کہ مشینوں اور آلات کو فعال بنائیں۔ انھیں ہدایت کی گئی ہے کہ جو سامان درکار ہے اس کی فہرست فراہم کردیں۔

Tabool ads will show in this div