فیصل آباد: پانچ سو روپے نہ دینے پر جنسی ہراسانی کا الزام

خاتون ملازمہ اسپتال سے فارغ کردی گئیں،ایم ایس
Harassment

فیصل آباد کے الائیڈ اسپتال میں خاتون کو ساتھی ورکر کی جانب سے ہراساں کرنے کے معاملے کی انکوائری رپورٹ مکمل ہوگئی۔

اسپتال کے مطابق اس معاملے میں الزام عائد کرنے والی خاتون خود قصوروار نکلیں۔ مذکورہ خاتون سینٹری ورکر نے وارڈ بوائے سے پانچ سو روپے بطور ادھار نہ ملنے پر اس پر ہراسانی کا الزام عائد کردیا تھا۔

متاثرہ وارڈ بوائے کا کہنا ہے کہ یہ خاتون پہلے بھی لوگوں سے پیسے لیتی رہی ہے جو وہ واپس نہیں کرتی تھی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ انہوں نے خاتون کو پیسے نہیں دیے تو اس نے ان کی عزت اچھال دی۔

میڈیکل سپرنڈنڈنٹ ارشد چیمہ نے بتایا کہ خاتون کے مطابق 8 اکتوبر کو اس کے ساتھ واقعہ ہوا جبکہ اسپتال انتظامیہ کو اس نے 11 تاریخ کو درخواست دی جس پر انکوائری کی گئی اور وہ تمام الزامات بے بنیاد نکلے۔

ارشد چیما نے مزید بتایا کہ خاتون کو اپنے ساتھی ملازم پر جھوٹا الزام لگانے کے جرم میں نوکری سے برخاست کردیا گیا ہے۔

خاتون نے وارڈ بوائے کے خلاف تھانہ سول لائن میں بھی درخواست دی ہوئی تھی جس پر تفتیش ہنوز جاری ہے۔

Harassment Case

Tabool ads will show in this div