کالمز / بلاگ

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ: ايسا صرف پاکستان ميں ہی ہوتا ہے

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کا آغاز 17  اکتوبر سے ہوگا

عرب کے صحرا ميں کرکٹ کی عالمی جنگ چھڑنے ميں ايک ہفتے سے بھی کم وقت رہ گيا ہے۔ جہاں بھارت، انگلينڈ، نيوزی لینڈ اور آسٹريلیا اپنی ٹيموں کو حتمی شکل دے چکے ہیں وہیں پاکستان کے ورلڈ کپ اسکواڈ ميں اکھاڑ پچھاڑ کردی گئی۔ کسی بھی عالمی مقابلے سے قبل سليکشن ميں تبدیلیاں پہلی بار نہيں ہوئی ہيں۔

سن 2019 کے عالمی کپ سے قبل بھی ايسا ہی ہوا تھا جب فہيم اشرف، عابد علی اور جنید خان کو ڈراپ کرکے محمد عامر، وہاب رياض اور آصف علی کو شامل کيا گيا تھا۔

سن 2017 ميں ہونے والی چيمپيئنز ٹرافی ميں اس وقت کے ہيڈ کوچ مکی آرتھر نے ناقص فٹنس پر عمراکمل کو انگلينڈ سے وطن واپس بھيجا پھر پہلا ميچ بھارت سے ہارنے کے بعد وہاب رياض بھی انجری کی وجہ سے ايونٹ سے باہر ہوئے اور رومان رئيس کو متبادل کے طور پر شامل کيا گيا۔

سن 2016 کے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ سے قبل پاکستان نے خرم منظور، رومان رئيس، افتخار احمد اور بابراعظم کو تبديل کيا تھا۔

گزشتہ ماہ ٹی ٹوئنٹی عالمی کپ کے لیے پاکستان نے 15 رکنی ٹيم کا اعلان کيا تو کئی نام اسکواڈ سے غائب تھے جن ميں سب سے قابل غور نام سرفراز احمد کا تھا۔ وکٹ کيپر بيٹسمين کو سن 2016 کے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے بعد مختصر فارميٹ کی قيادت ملی۔ وہ مسلسل 5 سال اسکواڈ کا حصہ رہے مگر رواں سال ہونے والے عالمي کپ کے لیے انہيں ڈراپ کرديا گيا تھا۔ سرفراز کی کپتانی ميں پاکستان دو سال ٹی ٹوئنٹی رينکنگ ميں نمبر ون پوزيشن پر رہا، قومي ٹيم نے لگا تار 11 سيريز جيتنے کا ريکارڈ بنايا ليکن انہيں ميگا ايونٹ ميں جگہ نہيں دی گئی کيوں کہ ايسا صرف پاکستان ميں ہی ہوتا ہے۔

سرفراز احمد کی جگہ اعظم خان، خوشدل شاہ اور آصف علی کو عالمی کپ کے دستے ميں شامل کيا گيا۔ اعظم خان کے پاس صرف 3 ميچز کا تجربہ تھا جبکہ آصف علی اور خوشدل شاہ تو انگلينڈ اور ويسٹ انڈيز جانے والی ٹيم کا حصہ بھی نہيں تھے ايسے ميں ان تينوں کی سليکشن نے سوالات اٹھا ديے اور ان کے ناموں پر بحث شروع ہوگئی۔ چيئرمين پی سی بی رميز راجا اور چيف سليکٹر محمد وسيم اسکواڈ کو بيک کرتے رہے ليکن جب نيشنل ٹی ٹوئنٹی کپ میں یہ کھلاڑی غیر معمولی کارکردگی نہ دکھا سکے تو انہیں مزید تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔

شائقين کرکٹ سميت سابق کرکٹرز قومی اسکواڈ سے ناخوش تھے اور پھر وزيراعظم عمران خان نے بھی ناراضگی کا اظہار کرديا جس کے بعد عالمی کپ کے اسکواڈ سے ايک نہيں، دو نہيں، تين نہيں، چار تبديلياں کردی گئيں۔ نيشنل ٹی ٹوئنٹی ميں ناقص پرفارمنس پر محمد حسنين، اعظم خان اور خوشدل شاہ کو اعلان کردہ اسکواڈ سے باہر کرديا گيا۔ وکٹ کيپر سرفراز احمد، بلےباز فخر زمان اور حيدرعلی کو متحدہ عرب امارات کا ٹکٹ دے ديا گيا۔ صہيب مقصود بھی کمر کی تکليف کا شکار ہوگئے جس کے بعد شعيب ملک کو ان کے متبادل کے طور پر شامل کيا گيا۔

شعیب ملک نے سن 2007 میں کھیلے گئے پہلے ٹی ٹونٹی ورلڈکپ میں پاکستان کی قیادت کی تھی۔ وہ سن 2009 کے ورلڈکپ کی فاتح قومی کرکٹ ٹیم کے اسکواڈ کا بھی حصہ تھے۔ انہوں نے سن 2012، 2014 اور 2016 کے ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ میں بھی پاکستان کی نمائندگی کی۔ يہ عالمی کپ کا ساتواں ايڈيشن ہے اورشعيب ملک چھٹی بار ان ايکشن ہونگے۔

شعيب ملک نے پاکستان کے لیے آخری ٹی ٹوئنٹی ميچ گزشتہ سال ستمبر ميں انگلينڈ کے خلاف کھيلا تھا جس ميں وہ صرف 14 رنز بناسکے تھے۔ ان کی حاليہ پرفارمنس پر نظؓر ڈاليں تو شعيب ملک نے نيشنل ٹی ٹوئنٹی میں 75 کی اوسط سے 225 رنز بنائے مگر کیريبيئن پريميئر ليگ کے 11 ميچز ميں وہ صرف 67 رنز ہي بناسکے۔ شعيب ملک نہ صرف سب سے تجربہ کار پاکستانی کھلاڑی ہيں بلکہ وہ سب سے زيادہ 118 انٹرنيشنل ميچز کھيلنے کا اعزاز بھی رکھتے ہيں۔ محمد حفيظ 113 ميچز کے ساتھ دوسرے اور بھارت کے روہت شرما 111 ميچز کے ساتھ تيسرے نمبر پر ہيں۔ شعيب ملک ٹيسٹ اور ون ڈے سے ريٹائرمنٹ لے چکے ہيں۔ ايک سال سے انٹرنيشنل کرکٹ سے دور رہنے والے کھلاڑی کی ميگا ايونٹ ميں شموليت کسی ''گيمبل'' سے کم نہيں۔

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کا ساتواں ایڈیشن اتوار 17 اکتوبر سے يو اے ای اور عمان ميں شروع ہوگا۔ ميگا ايونٹ کے کوالیفائنگ مرحلہ ميں 8 ٹیمیں شریک ہيں جن میں سری لنکا اور بنگلہ دیش بھی شامل ہیں اور ان میں سے 4 اگلے مرحلے (سپر 12) کے لیے کوالیفائی کریں گی۔ سپر 12 مرحلہ 23 اکتوبر سے شروع ہوگا۔ یہ ورلڈ ٹی ٹوئنٹی بھارت ميں منعقد ہونا تھا ليکن کرونا وائرس کے باعث اسے يو اے ای منتقل کرديا گيا۔ یہ ٹورنامنٹ 5 برس بعد منعقد ہو رہا ہے۔ ميگا ايونٹ کا فائنل 14 نومبر کو دبئي ميں ہوگا۔

پاکستان کا اسکواڈ

بابراعظم (کپتان)، شاداب خان (نائب کپتان)، محمد رضوان (وکٹ کیپر)، فخر زمان، محمد وسیم جونیئر، شعیب ملک، محمد حفیظ، محمد نواز، عماد وسیم، حسن علی، سرفراز احمد، حیدر علی، آصف علی، شاہین شاہ آفریدی اور حارث رؤف۔ ٹیم ک  ریزرو کھلاڑیوں میں عثمان قادر، خوشدل شاہ اور شاہنواز دھانی شامل ہیں۔

t20 match

pakistan cricket team

Tabool ads will show in this div