آئی۔ایس۔آئی چیف کی تقرری کااختیار وزیراعظم کے پاس ہے، وزیراطلاعات

تقرری قانون کے تقاضوں کے مطابق ہوگی

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ ڈی جی آئی ایس آئی کی تقرری کا اختیار وزیر اعظم کے پاس ہے، اس حوالے سے تمام آئینی و قانونی تقاضے پورے کئے جائیں گے۔

کابینہ اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ کے دوران وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ تمام قانونی تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے آئی ایس آئی کے سربراہ کی تقرری عمل میں لائی جائے گی۔

فواد چوہدری نے بتایا کہ گزشتہ شب وزیراعظم عمران خان اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کے مابین ایک تفصیلی میٹنگ ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم اور آرمی چیف کے درمیان قریبی اور خوشگوار تعلقات ہیں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ پاکستان کے آرمی چیف ایسا کوئی قدم نہيں اٹھائيں گے جس سے سول سيٹ اپ کی عزت کم ہو جبکہ ويراعظم بھی کوئی ايسا فیصلہ نہیں کریں گے جس سے فوج کی توقیر ميں کمی واقع ہو۔

یہ افواہیں گردش کررہی تھیں کہ وزیراعظم آفس ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن جاری کرنے میں تاخیر کررہا تھا۔

وفاقی وزیر شیخ رشید احمد نے نوٹیفکیشن میں تاخیر کی خبروں کے سوال کا واضح جواب دینے سے گریز کرتے ہوئے کہا تھا کہ عسکری و سیاسی قیادت سے متعلق معاملات پر بات کرنے کا اختیار وزیر اطلاعات فواد چوہدری کے پاس ہے۔

آئی ایس پی آر نے 6 اکتوبر کو پاک فوج میں تقرری و تبادلوں سے متعلق نوٹیفکیشن جاری کیا تھا۔ جس میں بتایا گیا تھا کہ موجودہ ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کو کور کمانڈر پشاور تعینات کردیا گیا ہے۔

آئی ایس پی آر کے نوٹیفکیشن کے مطابق لیفٹننٹ جنرل فیض حمید کی جگہ لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم کو ڈی جی آئی ایس آئی مقرر کیا گیا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ ڈی جی آئی ایس آئی کا تقرر وزیراعظم آفس کی جانب سے نوٹیفکیشن کے اجراء تک مؤثر نہیں ہوگا۔ یہی وجہ ہے کہ مبینہ طور پر نوٹیفکیشن میں تاخیر کی گئی۔

لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کی کور کمانڈر پشاور تقرری نے انہیں اگلا آرمی چیف بننے کے قریب کردیا ہے۔

سربراہ پاک فوج متوقع امیدواروں میں تجربہ کی بنیاد پر تھری اسٹار جنرل یہ ہیں۔

لیفٹننٹ جنرل ساحر شمشاد مرزا، کمانڈر 10 کور، راولپنڈی

لیفٹننٹ جنرل اظہر عباس، چیف آف جنرل اسٹاف (سی جی ایس)، جنرلہیڈ کوارٹرز، راولپنڈی

نعمان محمود، کمانڈر 11 کور، پشاور

لیفٹننٹ جنرل فیض حمید، ڈی جی آئی ایس آئی

دیگر معاملات پر بات کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ افغانستان سے پاکستان آنے والوں کیلئے ويزا فيس ختم کردی گئی جبکہ سی پيک پر کام کرنے والے غير ملکيوں کے لیے آن لائن ويزے کی سہولت دينے کا فيصلہ کیا گیا ہے۔

وفاقی وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ ڈاکٹر عبدالقدیر کی نماز جنازہ میں 15 کے قریب وفاقی وزراء شریک ہوئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی کابینہ نے آج کے اجلاس میں اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فیصلوں کی توثیق کی گئی۔

فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ رحمت اللعالمینﷺ اتھارٹی بچوں کے تعلیمی نصاب کے حوالے سے کام کرے گی جس میں پاکستان اور دنیا کے پائے کے اسکالرز شامل ہونگے۔

DG ISI

CABINET MEETING

PM IK

Tabool ads will show in this div