ڈی جی آئی ایس آئی کےنوٹیفکیشن کےمعاملےکوغلط رنگ دیاگیا،وزیراعظم

سب ایک پیچ پر ہیں
IK_3a فوٹو : آن لائن

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ڈی جی آئی ایس آئی نوٹی فیکیشن کے معاملے کو غلط رنگ نہ دیا جائے۔ ہم سب ایک صفحے پر ہیں۔

وفاقی کابینہ کے 12 اکتوبر کو ہونے والے اجلاس میں نئے ڈی جی آئی ایس آئی کی تعیناتی سے متعلق بھی معاملات زیر غور آئے۔ وزیراعظم عمران خان نے ڈی جی آئی ایس آئی نوٹیفکیشن معاملے پر کابینہ کو اعتماد میں لیا۔

کابینہ اجلاس سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ نوٹیفکیشن کے معاملے کو غلط رنگ نہ دیا جائے۔ ہم سب ایک پیج پر ہیں،جلد معاملہ حل کر لیں گے۔

واضح رہے کہ نئے ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹننٹ جنرل ندیم انجم کی بطور ڈائریکٹر جنرل تعیناتی کا نوٹی فیکیشن جاری نہ ہونے پر سوشل میڈیا پر مختلت قیاس ارائیاں جاری تھیں۔ 90 کی دہائی تک آئی ایس آئی کے ڈی جی کی تعیناتی معمول کی بات سمجھی جاتی تھی، تاہم گزشتہ کچھ سالوں سے اس عہدے پر تعیناتی خاص اہمیت اختیار کرگئی ہے۔

آئی ایس آئی کے ڈائریکٹر جنرل کی تقرری کے سلسلے میں ذرائع ابلاغ میں پیدا ہونے والی قیاس آرائیاں اس ادارے کی اہمیت کو واضح کرتی ہے۔ حالیہ دنوں میں بھی آئی ایس آئی کے ڈی جی نے ایسی مرکزی حیثیت حاصل کر لی ہے کہ ڈی جی آئی ایس آئی کی ریٹائرمنٹ سے مہینوں قبل ہی نئے سربراہ کے بارے میں میڈیا اور سیاسی حلقوں میں قیاس آرائیاں شروع ہوئیں۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ آئی ایس آئی ملک کی داخلی اور خارجی سلامتی کی صورت حال میں مرکزی اور کلیدی کردار ادا کرتی ہے۔

آئی ایس آئی کے ڈی جی کی تعیناتی کے بارے میں قومی میڈیا میں خبریں آنے اور اسٹرٹیجک و سیاسی تجزیہ نگاری کا سلسلہ 2011 میں اس وقت کے ڈی جی آئی ایس آئی لیفٹیننٹ جنرل احمد شجاع پاشا کی ہائی پروفائل ملازمت میں توسیع سے شروع ہوا تھا۔

DG ISI

FAIZ HAMEED

NADEEM ANJUM

Tabool ads will show in this div