سندھ میں نومبر میں خسرہ مہم شروع کرنیکا فیصلہ

رواں سال خسرے کے2400 کیسز رپورٹ
فائل فوٹو
فائل فوٹو
فائل فوٹو

سندھ میں خسرے کے کیسز اور اموات میں خطرناک حد تک اضافے کے بعد صوبے بھر میں انسداد خسرہ مہم نومبر میں شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

محکمہ صحت سندھ کے مطابق خسرہ مہم 15نومبر سے 27 نومبر تک چلائی جائے گی۔ محکمے کے مطابق گزشتہ سال خسرے کے 664 کیسز سامنے آئے، جب کہ خسرے سے 4 اموات ہوئیں۔ رواں سال 10 اکتوبر تک خسرے کے 2400 سے زائد مریض رپورٹ ہوئے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق رواں سال 9 ماہ کے دوران خسرے سے 38 اموات ہوئی ہیں۔ سندھ میں روبیلا کے گزشتہ سال301جب کہ رواں سال117کیس رپورٹ ہوئے۔

واضح رہے کہ گزشتہ ماہ طبی جریدے نیچر میڈیسن کی شائع کردہ رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ پاکستان 2021 میں خسرہ کے خلاف ویکسی نیشن نہ کرانے والے سرفہرست 5 ممالک میں شامل ہے۔ رپورٹ کے مطابق پاکستان میں گزشتہ سال 40 ملین بچوں کو خسرہ کی ویکسین نہیں لگائی گئی جب کہ دنیا بھر میں گزشتہ سال 120 ملین بچوں کو خسرہ کی ویکسین نہیں لگائی گئی۔

محققین کا کہنا ہے کہ صحت کے شعبے میں سرمایہ کاری میں کمی، طبی خدمات کا نہ ہونا، غذائی قلت، ویکسین لگوانے میں ہچکچاہٹ، عوامی غفلت پاکستان میں خسرہ کے پھیلاؤ اور اموات کی شرح میں اضافے کا سبب بن سکتے ہیں۔

محققین کے مطابق خسرہ پر قابو پانے کیلئے ویکسی نیشن جاری رکھنا بہت اہم ہے، خسرہ کو ویکسی نیشن کے ذریعے جلد قابو نہیں پایا گیا تو یہ پاکستان کے ہیلتھ کیئر سسٹم کیلئے تباہی کا سبب بن سکتا ہے۔

HEALTH

MEASEL

Tabool ads will show in this div