کراچی: پولیس اہلکاروں کا قتل، عبید کےٹو اور نادرشاہ بری

ایم کیو ایم ٹارگٹ کلرز کی سزا کیخلاف اپیل منظور
[caption id="attachment_2066656" align="alignnone" width="800"]Sindh-High-Court-1 فوٹو: سماء ڈیجیٹل[/caption]

سندھ ہائيکورٹ نے ایم کیو ایم ٹارگٹ کلرز کی سزا کے خلاف اپیل منظور کرتے ہوئے ملزمان عبید عرف کے ٹو اور نادر شاہ کو بری کر دیا۔

پیر 11اکتوبر کو دو پولیس اہلکاروں کے قتل کے الزام ميں ایم کیو ایم ٹارگٹ کلرز کی سزا کے خلاف اپیل سندھ ہائيکورٹ نے منظور کرلی۔

عدالت نے ريمارکس ديے کہ پراسیکیوشن ملزمان کی سزا برقرار رکھنے کے لیے ٹھوس شواہد پیش نہیں کرسکی۔

پوليس کے مطابق ملزمان نے سن 2000 میں ایم اے جناح روڈ پر پولیس اہلکاروں کو قتل کیا تھا، ہلاک ہونے والوں میں پولیس اہلکار ریحان اور نثار شامل تھے جبکہ ملزمان کے خلاف انسداد دہشت گردی عدالت میں دیگر مقدمات بھی زیر سماعت ہیں۔

عبید عرف کے ٹو اور نادر شاہ کو ایم کیوایم کے مرکز نائن زيرو سے گرفتار کیا گیا تھا۔ انسداد دہشت گردی عدالت نے جرم ثابت ہونے پرملزم  کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔

واضح رہے کہ ایم کیوایم مرکز نائن زیرو سے اسلحہ برآمدگی کیس میں عبید کے ٹو سمیت 11 ملزمان کی سزا کے خلاف اپیل پر رینجرز کے اسپیشل پبلک پراسیکیوٹر نے دلائل کے لیے عدالت سے مہلت طلب کی تھی۔

عدالت نے رینجرز پراسیکیوٹر کو جواب جمع کرانے کے لیے مہلت دیتے ہوئے سماعت 12 اکتوبر2021 تک ملتوی کردی۔

انسداد دہشت گردی عدالت نےعبید کےٹو پرجرم ثابت ہونےکے بعد 14 سال قید کی سزا سنائی تھی جب کہ مجرم کی منقولہ اورغیرمنقولہ جائیداد کی ضبطگی کا بھی حکم دیا گیا تھا۔

پولیس کے مطابق عبید کےٹو کی نشاندہی پر اپوا کالج گراؤنڈ سے بھاری تعداد میں اسلحہ برآمد ہوا تھا۔رینجرز نے11 مارچ سنہ 2015 کونائن زیرو پرچھاپے کے دوران اسلحہ اور گولہ بارود برآمد کیا تھا۔

Tabool ads will show in this div