ملک میں ذہنی مسائل کے حل کیلئےہیلپ لائن کا قیام

پاکستان میں 14 ملین افراد ذہنی صحت کے مسائل کا شکار ہیں

وفاقی پارلیمانی سیکرٹری کنول شوذب نے کہا ہے کہ پاکستان میں 14 ملین افراد ذہنی صحت کے مسائل کا شکار ہیں اوران مسائل کے حل کے لیے ہیلپ لائن قائم کردی گئی ہے۔

اتوار کو اسلام آباد میں ذہنی مسائل کے حل کیلئے قائم ہیلپ لائن کی تقریب میں بات کرتے ہوئے کنول شوذب نے بتایا کہ ملک میں ذہنی مریضوں کےعلاج کیلئے ہیلپ لائن قائم کی جا رہی ہے اور اس منصوبےمیں ماہرین نفسیات بھی حصہ ہوں گے۔

کنول شوذب نے بتایا کہ ہیلپ لائن کے نمبر 1282 پر لوگوں کو ذہنی مسائل کا حل بتایاجائے گا۔ملک میں ذہنی مسائل زیادہ جب کہ ان سے نمٹنے کیلئے وسائل کم ہیں۔ہیلپ لائن کا یہ منصوبہ سنگ میل ثابت ہوگا جس میں 40 سائیکالوجسٹ اور سائیکاٹرسٹ شامل ہوں گے۔

انھوں نے یہ بھی بتایا کہ لوگوں کوذہنی امراض سے چھٹکارے کیلئے مقامی زبانوں میں بھی آگاہی فراہم کی جائے گی اوراس منصوبے کا دائرہ صوبوں،آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان تک بھی پھیلایا جائے گا۔

mental stress

Tabool ads will show in this div