ٹیکنالوجی

ڈوٹا2 انٹرنیشنل میں 4کروڑڈالرکی انعامی رقم، 2پاکستانی بھائی بھی شامل

مقابلے رومانیہ کے دارالحکومت بخارسٹ میں منعقد ہونگے

Sumail-Hasan_Yawar-Hasan

عالمی سطح پر ڈوٹا ٹو انٹرنیشنل کا ایونٹ پھر سے شروع ہوگیا ہے جس میں دنیا بھر سے گیمرز مقابلے میں جیت کر زیادہ سے زیادہ رقم حاصل کر سکتے ہیں۔ پاکستان میں اس کی خبر بڑی گیمنگ کمیونٹی کی وجہ سے نہیں بلکہ اس وجہ سے ہے کیونکہ کراچی کے دو بھائی آپس میں مدمقابل ہیں۔

ڈوٹا کا مطلب (ڈیفنس آف دی اینشنٹس) ہے۔

گیمز کی کمپنی ’’والو‘‘ نے گزشتہ سال کرونا وائرس کے باعث ٹورنامنٹ منسوخ کر دیا تھا۔ اس سال ایونٹ اگست میں منعقد ہونا تھا تاہم اسے اکتوبر تک کے لیے ملتوی کیا گیا تھا، جو کہ اب شروع ہوچکا ہے۔

مقابلے کے دو راؤنڈ گروپ اسٹیج اور اہم ایونٹ پر مشتمل ہوں گے۔

گروپ اسٹیج

گروپ اسٹیج کا مرحلہ 7 اکتوبر سے 10 اکتوبر تک کھیلا جائے گا جبکہ 18 ٹیمیں دنیا بھر میں کوالیفائی کر چکی ہیں۔ ان میں سے 12 نے اپنی ڈوٹا پرو سرکٹ رینکنگ کی بنیاد پر اپنا راستہ بنایا ہے اور چھ ٹیمیں کوالیفائنگ راؤنڈ میں پہنچی ہیں جن کا تعلق شمالی امریکا، جنوبی امریکا، مغربی یورپ، مشرقی یورپ، چین اور جنوب مشرقی ایشیا سے ہے۔

ان ٹیموں کو دو گروپوں میں تقسیم کیا جائے گا جن میں نو ٹیمیں ہوں گی جہاں وہ راؤنڈ رابن فارمیٹ میں کھیلیں گی۔ تمام میچ بیسٹ آف ٹو میں کھیلے جاتے ہیں۔ ہر گروپ کی 9 میں سے 4 ٹیموں کو مرکزی ایونٹ کے اَپر بریکٹ میں ترقی دی جائے گی۔ ہر گروپ میں سب سے نیچے کی ٹیم گروپ مرحلے سے خارج ہو جائے گی اور ہر گروپ کی باقی چار ٹیمیں اہم ایونٹ کے لوئر بریکٹ میں چلی جائیں گی جہاں وہ ایلیمینیٹرز سے کھیلیں گی۔

اہم ایونٹ

ڈوٹا 2 انٹرنیشنل کا اہم ایونٹ 12 اکتوبر سے 17 اکتوبر تک کھیلا جائے گا۔ 16 ٹیمیں ڈبل ایلیمینیشن بریکٹ میں کھیلیں گی۔ وہ ٹیمیں جو اَپر بریکٹ میں جگہ حاصل کرنے میں کامیاب ہوں گی ان کے ٹورنامنٹ میں رہنے کے متعدد مواقع ہوں گے۔ لوئر بریکٹ کی ٹیموں کے مابین ایلیمینیٹرز ہوں گے۔ لوئر بریکٹ کا پہلا راؤنڈ بیسٹ آف ون میں ہوگا، بقیہ تمام میچز بیسٹ آف تھری کے ہوں گے اور گرینڈ فائنل بیسٹ آف فائیو میں ہوگا۔

وہ ٹیمیں جو گروپ مرحلے میں حصہ لیں گی

گروپ اے: الائنس، ایول جینئسز، انوکٹس گیمنگ، او جی، ٹی1، ایسٹر، اَن ڈائنگ، تھنڈر پریڈیٹر، ورچس ڈاٹ پرو۔

گروپ بی: بیسٹ کوسٹ، ایلیفینٹ، فنیٹک، پی ایس جی ڈاٹ ایل جی ڈی، کیونسی کریو، ایس جی اسپورٹس، سیکریٹ، اسپرٹ، وی سی گیمنگ۔

ٹورنامنٹ میں سمیل حسان اور یاور حسان نامی دو پاکستانی بھائی بھی شرکت کریں گے۔ لیکن کراچی کے لڑکوں کو ایک دوسرے کے خلاف کھیلنے کے لیے مرکزی ایونٹ میں جانا ہوگا، وہ 2012 میں امریکہ چلے گئے تھے۔

سمیل حسان 2015 میں انٹرنیشنل چیمپئن شپ جیتنے والے سب سے کم عمر ترین کھلاڑی بنے تھے۔ اس کی موجودہ مالیت 1.3 ملین ڈالر سے زیادہ ہے۔

ٹیم لیکوڈ کے کوالیفائرز سے باہر نکلنے کے بعد، سمیل حسان کو مغربی یورپی ٹیم اور دو بار کی چیمپیئن او جی نے پہلی پوزیشن حاصل کرنے والی ’’انا‘‘ کے متبادل کے طور پر اٹھایا ہے۔

یہ افواہیں گردش رہی تھیں کہ سمیل حسان کو او جی سے نکال دیا گیا ہے، تاہم ٹیم نے تصدیق کی ہے کہ وہ ان کی آخری لائن اَپ میں کھیلے گے۔

یاور حسان، سمیل حسن کے بڑے بھائی نے ابھی تک صرف انٹرنیشنل مقابلہ جیتا ہے۔ وہ شمالی امریکی ٹیم کیونسی کریو کی نمائندگی کر رہے ہیں۔ ای اسپورٹس ارنگ ویب سائٹ کے مطابق، ان کی موجودہ خالص مالیت 4لاکھ ڈالر سے زیادہ ہے۔

ویڈیو گیم کی کمپنی والو نے 2011 میں اپنا پہلا بین الاقوامی ایونٹ کا اعلان کیا جب یہ کھیل دنیا میں اتنا مقبول نہیں تھا اور اسے نیٹس ونسر (نا وی) نے جیتا تھا۔ 2011 ایونٹ کا انعامی پول 16لاکھ ڈالر تھا اور یہ 17 اگست سے 21 اگست 2011 تک کھیلا گیا۔

انٹرنیشنل ٹو 31اگست سے 2 ستمبر تک کھیلا گیا تھا۔ اسے انویکٹس گیمنگ نے جیتا تھا اور انعامی پول 16لاکھ ڈالر تھا۔ یہ پہلا موقع تھا جب چین کی کسی ٹیم نے چیمپئن شپ جیتی، یہ وہ ملک ہے جہاں کھیل کے زیادہ تر کھلاڑی ہیں۔

انٹرنیشنل تھری کو الائنس نے جیتا اور یہ وہ سال تھا جب گیم کو سرکاری طور پر دنیا بھر میں مفت کھیلنے کا اعلان کیا گیا تھا اور یہ اسٹیم گیم انجن پر دستیاب تھا۔ انعامی پول 28لاکھ 74ہزار380 ڈالر تھی۔

ٹیم نیوبی نے ایک کروڑ 9لاکھ 23ہزار977 ڈالر کے پرائز پول کے ساتھ ٹی14 جیتا۔ کھیل کے دنیا بھر میں مقبول ہوتے ہی انعامی رقم میں بھی نمایاں اضافہ ہوا۔

سال 2015 میں پاکستان ڈوٹا ٹو کے بین الاقوامی میں داخل ہوا اس وقت ایول جینئسز نے ٹورنامنٹ جیتا جس کا انعام ایک کروڑ 84لاکھ 29ہزار613 ڈالر تھا۔

ونگز گیمنگ، جو ٹیم کے ممبروں کے درمیان اختلافات کی وجہ سے زیادہ دیر تک نہیں چل سکی، وہ ٹی15 کی چیمپیئن تھی۔ انعامی پول اس وقت تک 2کروڑ 7لاکھ 70ہزار460 ڈالر تک پہنچ چکی تھی۔

ٹیم لیکوئڈ نے 2017 میں عظیم الشان ایونٹ جیتا جس میں 2کروڑ 47لاکھ 87ہزار916 ڈالر کا پرائز پول تھا۔ اس کے بعد ٹیم کے کھلاڑیوں میں اختلافات تھے اور کپتان کورو صالحی جسے کوروکی بھی کہا جاتا ہے، الگ ہوگئے اور اپنی ٹیم بنائی۔

او جی 2018 اور 2019 میں ورلڈ چیمپئن بنی۔ یہ پہلی ٹیم بن گئی جس نے مسلسل چیمپئن شپ جیتی۔ پچھلے سال منسوخ کیا گیا ٹی آئی 10 اس اکتوبر میں کھیلا جا رہا ہے اور 2016 کے مقابلے میں پرائز پول دگنی ہے۔

DOTA

Tabool ads will show in this div