ندیم احمد انجم ڈی جی آئی ایس آئی تعینات

لیفٹننٹ جنرل فیض حمید کور کمانڈر پشاور تعینات

لیفٹننٹ جنرل ندیم احمد انجم کو نیا ڈی جی آئی ایس آئی تعینات کردیا گیا، جب کہ لیفٹننٹ جنرل فیض حمید کو کمانڈر 11 کور تعینات کیا گیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ( آئی ایس پی آر ) کے مطابق پاک فوج میں معمول کے تبادلوں اور تقرری کے دوران کمانڈر 5 کور لیفٹننٹ جنرل ندیم احمد انجم کو نیا ڈائریکٹر جنرل انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) اور لیفٹننٹ جنرل فیض حمید کو کور کمانڈر پشاور تعینات کیا گیا ہے۔

لیفٹننٹ جنرل ندیم احمد انجم کون ہیں

بحیثیت ڈی جی آئی ایس آئی تعیناتی سے قبل ندیم احمد انجم کمانڈر 5 کور کے عہدے پر فرائض انجام دیتے رہے۔ انہیں نومبر 2020 میں کمانڈر 5 کور تعینات کیا گیا تھا۔ انہیں سنہ 2017 میں آپریشن ضرب عضب اور آپریشن ردالفساد کے دوران آئی جی ایف سی بلوچستان تعینات کیا گیا۔اس وقت چوہدری نثار وزیر داخلہ تھے۔ انہیں ہلال امتیاز ملٹری سے بھی نوازا گیا۔

انہیں پنجاب رجمنٹ کی لائٹ اینٹی ٹینک بٹالین میں کمیشن دیا گیا۔ ندیم انجم کو جنرل آفیسر کو کمانڈ ، اسٹاف اور انسٹرکشنل اسائنمنٹس کا متنوع تجربہ حاصل ہے۔ انہوں نے کمبائنڈ آرمز سینٹر یوکے، اسٹاف کالج کوئٹہ ،ایڈوانس اسٹاف کورس یوکے ، این ڈی یو اسلام آباد، اے پی سی ایس ایس یو ایس اے اور رائل کالج آف ڈیفنس اسٹڈیز یوکے سے بھی تعلیم حاصل کی۔

نئے ڈی جی آئی ایس آئی کو روایتی اور ذیلی روایتی خطرے کے ماحول میں کمان کا وسیع تجربہ حاصل ہے۔ وہ مغربی سرحد اور ایل او سی پر کمانڈ کے علاوہ بلوچستان میں طویل خدمات انجام دے چکے ہیں۔ انہوں نے جنوبی وزیرستان ایجنسی میں انفنٹری بریگیڈ ، کرم اور ہنگو میں انفنٹری بریگیڈ کو کمانڈ کیا۔

Flag of Pakistan's V Corps.gif

کور 5

لیفٹیننٹ جنرل ندیم احمد انجم پاک فوج کی پانچویں لیکن سب سے اہم قرار دی جانے والی کور کے کمانڈر ہیں۔ یہ کور پاکستان کے سب سے زیادہ آبادی والے شہر کراچی میں ہے اور اسی مناسبت سے اس کور کے کمانڈر کو کراچی کا کور کمانڈر بھی کہا جاتا ہے۔ اس سے قبل کور کمانڈر کراچی رہنے والے نوید مختار، ظہر السلام، بھی ڈی جی آئی ایس آئی کے عہدے پر تعینات رہے۔https://upload.wikimedia.org/wikipedia/commons/8/89/Flag_of_Pakistan%27s_XI_Corps.gif

Faiz-Hameed-1 فوٹو: ریڈیو پاکستان

جنرل فیض حمید کون ہیں

واضح رہے کہ لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کو جون 2019 میں ڈائریکٹر جنرل انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) مقرر کیا گیا تھا۔ انہیں لیفٹیننٹ جنرل عاصم منیر کی جگہ تعینات کیا گیا تھا، جو 8 ماہ تک اس عہدے پر فائز رہے۔

انہیں اپریل 2019 میں لیفٹیننٹ جنرل کے عہدے پر ترقی دی گئی تھی۔ ڈی جی آئی ایس آئی تعیناتی سے قبل وہ جی ایچ کیو میں ایڈجوٹنٹ جنرل کے عہدے پر فائز تھے۔

لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کا تعلق چکوال سے ہے۔ وہ پاک فوج میں پاس آؤٹ ہونے کے بعد وہ بلوچ رجمنٹ کا حصہ بنے۔ اس سے قبل وہ راول پنڈی میں ٹین کور کے چیف آف اسٹاف، پنوں عاقل میں جنرل آفیسر کمانڈنگ اور آئی ایس آئی میں ڈی جی کاؤنٹر انٹیلیجنس (سی آئی) سیکشن بھی رہ چکے ہیں۔

فیض حمید کا نام نومبر سنہ 2017 میں اسلام آباد میں فیض آباد کے مقام پر مذہبی تنظیم تحریکِ لبیک کے دھرنے کے دوران بھی سامنے آیا تھا۔

آج بروز بدھ 6 اکتوبر کو ہونے والے دیگر تبادلوں میں لیفٹیننٹ جنرل محمد عامر کو کور کمانڈر گوجرانوالہ، جب کہ لیفٹیننٹ جنرل عامر منیر کی بحیثیت کوارٹر ماسٹر جنرل تعيناتی شامل ہے۔

فیض حمید کی کمانڈر الیون کور تعیناتی کے بعد وہ آرمی چیف بننے کی ریس میں شامل ہوگئے ہیں، کیوں کہ آرمی چیف بننے کیلئے کور کی کمان لازمی ہوتی ہے۔ موجودہ آرمی چیف کو توسیع ملنے کے بعد ان کی مدت ملازمت اگلے سال نومبر میں مکمل ہو رہی ہے۔

پاکستان کی پارلیمنٹ نے پاکستان آرمی (ترمیمی) بل 2020 منظور کیا تھا جس کے تحت جنرل قمر جاوید باجوہ کو بطور آرمی چیف 3 برس کی توسیع دی گئی۔ اس بل کی منظوری کے بعد یہ واضح ہوگیا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ 29 نومبر 2022 کو ریٹائرہونگے۔

موجودہ حالات میں لیفٹینٹ جنرل فیض حمید کی بحیثیت کمانڈر الیون کور تعیناتی خطے اور افغانستان کیساتھ تعلقات اور تبدیلیوں کے تناظر میں اہم سمجھی جا رہی ہے۔

واضح رہے کہ رواں ماہ 3 تھری اسٹار جنرلز اپنی مدت ملازمت پوری کریں گے، جس میں لیفٹننٹ جنرل ماجد احسن، لیفٹننٹ جنرل عامر عباسی اور لیفٹننٹ جنرل حمود الزمان شامل ہیں۔

نیا آرمی چیف کون ہوگا

نئے آرمی چیف کیلئے ممکنہ طور پر 4 نام سامنے آرہے ہیں، جس میں سب سے سینیر لیفٹننٹ جنرل ساحر شمشاد، ٹین کور کے کمانڈر لیفٹننٹ جنرل اظہر عباس، چیف آف جنرل اسٹاف نعمان محمود اور لیفٹننٹ جنرل فیض حمید شامل ہیں۔

آئی ایس آئی

آئی ایس آئی سیاسی اور فوجی دونوں سطح پر کام اور اپنا اِن پُٹ دیتی ہے۔

ڈی جی آئی ایس آئی کی تعیناتی

واضح رہے کہ کچھ روز قبل سوشل میڈیا پر نئے ڈی جی آئی ایس آئی کے حوالے سے مختلف نام زیر گردش تھے، جس میں کمانڈر 5 کور اور سابق ڈی جی آئی ایس پی آر آصف غفور کا نام زیر بحث رہا۔

ڈی جی آئی ایس آئی کی تقرری وزیراعظم کی صوابدید ہے اور ادارہ بھی قانون کے تحت وزیر اعظم کے ماتحت ہے۔ اس طرح ڈی جی آئی ایس آئی وزیر اعظم اور فوجی سربراہ دونوں کو ہی جوابدہ ہوتے ہیں۔ اب تک صرف جنرل (ر) اشفاق پرویز کیانی وہ واحد فوجی سربراہ ہیں جنھوں نے آئی ایس آئی کی کمان بھی کی۔

اس سے پہلے عام طور پر اس اہم عہدے پر تعیناتی کا فیصلہ فوج خود کرتی تھی اور مجوزہ نام کی سمری پر وزیر اعظم دستخط کرتے تھے۔

DG ISI

XI Corps

ASIF ghafoor

Nadeem Ahmed Anjum

FAIZ HAMEED

KARACHI CORPS

Tabool ads will show in this div