ترقی پذیرممالک سے ایک کھرب ڈالرکی غیرقانونی منتقلی روکناہوگی، وزیراعظم

فیکٹ آئی پینل کی سفارشات پرعملدرآمد ضروری ہے، عمران خان
Oct 05, 2021

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/10/PM-IK-Speech-UN-Geneva-05-100.mp4"][/video]

وزیراعظم عمران خان نے دنیا پر زور دیا ہے کہ ترقی پذير ممالک سے بدعنوان اشرافيہ سالانہ ايک کھرب ڈالر ترقی يافتہ ممالک منتقل کرتی ہے، يہ سنگين صورتحال ہے جسے روکنے کی ضرورت ہے۔

وزيراعظم عمران خان نے ٹریڈ اینڈ ڈیولپمنٹ ورلڈ ليڈرز ورچول سمٹ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کی فيکٹ آئی پينل کی سفارشات پر عملدرآمد سے غيرقانونی رقم کی منتقلی روکی جاسکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ترقی پذیر ممالک سے بدعنوان اشرافیہ سالانہ ایک کھرب ڈالر ترقی یافتہ ممالک (ٹیکس ہیون) منتقل کرتی ہے، یہ سنگین صورتحال ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے اس بات پر زور دیا کہ ترقی پذیر ممالک ایک کھرب ڈالر کی ان ممالک تک منتقلی روکنے کی ضرورت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ فیکٹ آئی پینل کے مطابق 7 کھرب ڈالرز ٹیکس کی ان محفوظ پناہ گاہوں میں چھپائے گئے ہیں، یہ لوٹ مار ترقی پذیر دنیا کے کرپٹ حکمران طبقے کی وجہ سے ہورہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرونا وباء کے دوران ویکسین کی مساوی تقسیم یقینی بنانے کیلئے اقدامات کی ضرورت ہے، اس دوران ترقی پذیر ملکوں کیلئے قرضوں میں سہولت کی مہم چلائی۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ماحولیاتی تبدیلی کی وجہ سے گلیشیئرز پگھلنے کی شرح میں تیزی آئی ہے، امیر ممالک ماحول کیلئے مالی معاونت میں بھی اپنا حصہ ڈالیں۔

Tabool ads will show in this div