اسلام آباد میں پی ایم سی کی عمارت پر ینگ ڈاکٹرزکا دھاوا

لاٹھی چارج اور شیلنگ سے علاقہ میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگا
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/10/YDA-Protest-Isb-Shelling-05-10.mp4"][/video]

اسلام آباد میں منگل کو پاکستان میڈیکل کمیشن  کی عمارت پر ینگ ڈاکٹرز نے دھاوا بول دیا۔ پولیس کی جانب سے لاٹھی چارج اور شیلنگ سے علاقہ میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگا۔ ہنگامہ آرائی میں ملوث 15 افراد کو گرفتار کرلیا گیا۔

نیشنل لائسنسنگ کے امتحانات سے متعلق ینگ ڈاکٹرز کا احتجاج پرتشدد مظاہرے کی شکل اختیار کرگیا۔ میڈیکل کمیشن کی عمارت کے باہر مختلف شہروں سے آئے ہوئے ڈاکٹرز پرامن انداز میں احتجاج پر بیٹھے ہوئے تھے۔اس دوران کچھ ڈاکٹرز نے کہا کہ جب مطالبات مانے نہیں جارہے ہیں تو میڈیکل کونسل کی عمارت میں داخل ہوجانا چاہئے۔

ویڈیو:اسلام آبادمیں پاکستان میڈیکل کمیشن کی عمارت میں ہنگامہ آرائی

اس دوران پولیس نے پہنچ کر شیلنگ شروع کردی اور لاٹھی چارج کیا۔ کئی ینگ ڈاکٹرز کو لاٹھیاں بھی لگیں۔ ہنگامہ آرائی میں میڈیکل کمیشن کی عمارت کا مرکزی دروازہ توڑ دیا گیا اور عمارت کو بھی نقصان پہنچا۔ شیلنگ سے پولیس اور ینگ ڈاکٹرز کی طبیعت بھی خراب ہوئی جنھیں طبی امداد کے لیے اسپتال منتقل کیا گیا۔

چالیس منٹ کی ہنگامہ آرائی کے بعد پولیس نے صورتحال کو کنٹرول کیا۔پی ایم سی کی عمارت کے اندر مزید پولیس کی نفری تعینات کردی گئی ہے۔

اسلام آباد کے ڈی چوک پر پی ایم سی کے خلاف طلباء 12 روز سے احتجاج کررہے ہیں۔ میڈیکل کے طلباء اور طالبات کی بڑی تعداد ڈی چوک پرموجود تھی۔ طلباء نےاپنے مطالبات پورے ہونے تک دھرنا جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ ان کے ایم ڈی کیٹ کے ٹیسٹ دوبارہ لیےجائیں۔ طلبا نے کہا ہے کہ آن لائن پیپرز کے دوران دی گئی زیادہ ترڈیواسسز خراب تھیں۔

پیر کو معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے ایم ڈی کیٹ کے حوالے سے ویڈیو پیغام میں بتایا تھا کہ پی ایم سی نے پہلے ہی اعلان کر رکھا تھا کہ امتحان کے اختتام پر ایک پوسٹ اگزام انالیسز ہوگا اور اس امتحان کا پورا جائزہ سائنسی اعتبار سے لیا جائے گا جو تھرڈ پارٹی کرے گی۔

ڈاکٹر فیصل سلطان نے بتایا تھا کہ قائداعظم یونیورسٹی پوسٹ اگزام انالیسز کو انجام دے گی اورتجزیہ کرنے والے مکمل با اختیار ہوں گے تا کہ شفاف طریقے سے معائنہ ہوسکے۔ جو سوالات مبہم یا غیر واضح ہوں گے اُن کے مارکس دیے جائیں گے اور کوئی ایسا سوال جس کے ایک سے زائد جواب درست ہونگے اُس کا اسکور بھی طالب علموں کو دیا جائے گا۔

ڈاکٹر فیصل سلطان نے واضح کیا کہ پوسٹ اگزام انالیسز مستند ادارے کے ذریعے کروانے سے طالبعلموں اور اُن کے والدین کا اعتماد بحال ہوگا۔واضح رہے کہ ایم ڈی کیٹ میں بے ضابطگیوں کے خلاف پورے ملک میں طلباء احتجاج کررہے ہیں۔

PMC

Tabool ads will show in this div