عبیدکےٹو کی سزاکیخلاف اپیل:سرکاری وکیل غیرحاضر،عدالت برہم

چوہدری محمود انور کواسپیشل پبلک پراسکیوٹر مقرر کیا گیا

سندھ ہائیکورٹ نے ٹارگٹ کلرعبید کےٹو کی سزا کےخلاف اپیل کی سماعت کے موقع پر سرکاری وکیل کی عدم حاضری پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔

جمعرات کو سندھ ہائی کورٹ میں پولیس اہلکاروں کے قتل کے کیس میں سزایافتہ مجرم عبید کےٹو کی سزا کے خلاف اپیل کی سماعت ہوئی۔ سرکاری وکیل کی عدم حاضری پر عدالت نے اظہارِ برہمی کیا۔

اسسٹنٹ پراسیکیوٹر نے بتایا کہ چوہدری محمود انور کواسپیشل پبلک پراسکیوٹر مقرر کیا گیا ہے۔

عدالت نےآئندہ سماعت میں اسپیشل پبلک پراسکیوٹر کو حاضری یقینی بنانے کا حکم دیتے ہوئے اپیل کی مزید سماعت 5 اکتوبر2021  تک ملتوی کردی ہے۔

ملزمان نے کراچی کے سولجر بازار کی حدود میں2 پولیس اہلکاروں کو قتل کیا تھا۔انسداد دہشت گردی عدالت نے جرم ثابت ہونے پرملزم  کو عمر قید کی سزا سنائی تھی۔

واضح رہے کہ ایم کیوایم مرکز نائن زیرو سے اسلحہ برآمدگی کیس میں عبید کے ٹو سمیت 11 ملزمان کی سزا کے خلاف اپیل پر رینجرز کے اسپیشل پبلک پراسیکیوٹر نے دلائل کے لیےعدالت سے مہلت طلب کرلی ہے۔

عدالت نے رینجرز پراسیکیوٹر کو جواب جمع کرانے کے لیے مہلت دیتے ہوئے سماعت 12 اکتوبر2021 تک ملتوی کردی۔

انسداد دہشت گردی عدالت نےعبید کےٹو پرجرم ثابت ہونےکے بعد 14 سال قید کی سزا سنائی تھی جب کہ مجرم کی منقولہ اورغیرمنقولہ جائیداد کی ضبطگی کا بھی حکم دیا گیا تھا۔

پولیس کے مطابق عبید کےٹو کی نشاندہی پر اپوا کالج گراؤنڈ سے بھاری تعداد میں اسلحہ برآمد ہوا تھا۔رینجرز نے11 مارچ سنہ 2015 کونائن زیرو پرچھاپے کے دوران اسلحہ اور گولہ بارود برآمد کیا تھا۔

SINDH HIGH COURT

TARGET KILLER

OBAID K2

Tabool ads will show in this div