سندھ ہائیکورٹ نےشرجیل میمن کوبغیراجازت گرفتارکرنےسےروک دیا

شرجیل میمن کی درخواست پر حکم امتناع میں توسیع
Sep 29, 2021

سندھ ہائیکورٹ نے پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما شرجیل میمن کو بغیر اجازت گرفتار کرنے سے روک دیا ہے۔

آمدن سے زائد اثاثے اور اختیارات کے ناجائز استعمال پر شرجیل میمن کی نیب کی تحقیقات سے متعلق درخواست کی سماعت بدھ کو سندھ ہائی کورٹ میں ہوئی۔

نیب پراسیکیوٹرنے عدالت کو بتایا کہ شرجیل میمن کے خلاف 2 ریفرنسز دائر ہوچکے ہیں اوران کے خلاف 2 انکوائریز اور 2 انوسٹی گیشن بھی جاری ہیں۔

شرجیل میمن کے وکیل نے کہا کہ لگتا ہے کہ نیب شرجیل میمن کے خلاف مزید خفیہ انکوائریاں بھی کررہا ہے۔

عدالت نے نیب پراسیکوٹر کو ہدایت کی کہ آپ عدالت میں نئی رپورٹ پیش کریں۔ عدالت نے شرجیل میمن کی درخواست پر حکم امتناع میں توسیع کرتے ہوئے شرجیل میمن کی درخواست کی سماعت 27 اکتوبر تک ملتوی کردی ہے۔

دو ماہ قبل سندھ ہائيکورٹ نے سابق صوبائی وزير شرجيل انعام ميمن کی بيرون ملک جانے کی درخواست منظورکرتے ہوئےان کو 30دن کے لیے ملک سے باہر جانے کی اجازت دی تھی۔پیپلزپارٹی کے رہنما کو عدالت نے 10 لاکھ روپے زرِضمانت جمع کرانے کا حکم دیا تھا۔

واضح رہےکہ نیب ریفرنس کے مطابق شرجیل میمن کے 2.43 ارب روپے کے اثاثے ہیں اور انہوں نے متعدد رشتہ داروں کے نام پر جائیدادیں خرید رکھی ہیں۔ پی پی رہنما پر الزام ہے کہ انہوں نے 18لاکھ روپے غیر قانونی طور پر حوالہ اور ہنڈی کے ذریعے ملک سے باہر منتقل کیے۔

SHARJEEL MEMON

Tabool ads will show in this div