اراضی اسکینڈل:انجم عقیل اور پولیس فاؤنڈیشن کا معاہدہ کرپشن پر مبنی قرار

اسٹاف رپورٹ


اسلام آباد : سپريم کورٹ نے نیشنل پولیس فاؤنڈیشن اراضی اسکینڈل کا فیصلہ سنادیا، عدالت نے سابق رکن قومی اسمبلی انجم عقیل کو اراضی کی رقم جمع کرانے کی ہدایت کردی، عدم ادائیگی پر جائیداد ضبط یا فوجداری کارروائی کی جائے گی۔ 


سپریم کورٹ نے نیشنل پولیس فاؤنڈیشن اراضی اسکینڈل کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا، سابق رکن قومی اسمبلی انجم عقیل اور نیشنل پولیس فاؤنڈیشن کے درمیان اراضی کی خریداری کا معاہدہ کالعدم قرار دے دیا گیا جبکہ فیصلے میں معاہدے کو بدعنوانی پر مبنی قرار دیا گیا ہے۔


سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق پولیس فاؤنڈیشن کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے انجم عقیل کے ساتھ ملی بھگت اور بدنیتی سے کرپشن کی، بہت سے غیر مجاز افراد کو ایک سے زیادہ پلاٹ دیئے گئے، کئی افراد کو صرف 100 روپے کے عوض ایک کنال کا پلاٹ دے دیا گیا۔


عدالت نے قواعد کے خلاف الاٹ کئے گئے 156 پلاٹ منسوخ کردیئے اور انجم عقیل کو 2 ماہ میں اراضی یا 88 ڈیویلپڈ پلاٹ کی رقم جمع کرانے کا حکم دے دیا، عدم ادائیگی پر جائیداد ضبطی سمیت فوجداری کارروائی کرنے کا حکم دیا۔


عدالت نے چیئرمین نیب کو انجم عقیل اور دیگر ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا بھی حکم دیا اور 90 روز میں رپورٹ رجسٹرار کو پیش کرنے کی ہدایت کردی۔ سماء

اور

کا

پر

اسکینڈل

marriages

kolkata

Tabool ads will show in this div