تہرا قتل، پیپلزپارٹی کے 2ایم پی ایز بھائی ملزم قرار

ام رباب انصاف کیلئے ننگے پاؤں عدالت گئی تھیں

سرداری نظام کيخلاف آواز اٹھانے والی سندھ کی بہادر بیٹی ام رباب پہلے امتحان ميں کامياب ہوگئیں، 3 سال بعد عدالت نے پيپلزپارٹی کے دو سابق ایم پی ایز بھائيوں سردار چانڈيو اور برہان چانڈيو کو ملزم قرار دے ديا۔ جنوری 2018ء ميں ام رباب کے والد، چچا اور دادا کو قتل کردیا گيا تھا۔ فيصلہ آنے کے بعد ام رباب سجدے ميں گر گئیں۔ سرداری نظام کيخلاف آواز اٹھانے والی ام رباب نے عدالت میں پہلی جنگ جیت لی، والد، چچا اور داد کے قاتلوں کو عدالت سے ملزم قرار دلوادیا۔ دادو کی ماڈل کرمنل ٹرائل کورٹ نے پيپلزپارٹی کے سابق اراکین سندھ اسمبلی سردار چانڈیو اور برہان چانڈیو کو تہرے قتل کیس میں ملزم قرار دے ديا۔

مزید جانیے: ام ارباب کو بينظیر کے مزارپر داخلے سے روک دیا

دونوں کو ام رباب کے والد دادا اور چچا کے قتل کيس ميں شامل تفتيش کرنے کا حکم بھی ديا گيا، فيصلہ سُن کر ام رباب نے احاطہ عدالت ميں سجدہ شکر ادا کيا۔ قتل کیس میں نامزد ملزم رکن سندھ اسمبلی سردار چانڈیو کا کہنا ہے، جُرم ابھی ثابت نہيں ہوا۔ امام رباب کے والد، دادا اور چچا کو جنوری 2018ء ميں قتل کيا گيا تھا، تین سالوں سے ام رباب جدوجہد کررہی ہیں۔ انہوں نے چيف جسٹس کی گاڑی کو، ننگے پاؤں عدالتوں کے چکر کاٹے اور گڑھی خدا بخش ميں احتجاج بھی کيا تھا۔

Umme Rubab

DADU MURDER CASE

Tabool ads will show in this div