جاویداخترہتک عزت کیس میں کنگنارناوٹ کی درخواست مسترد

کنگنا نےمقدمہ خارج کرنے کیلئے درخواست دائرکی تھی

بمبئے ہائیکورٹ نے شاعر اور گیت نگارجاوید اختر کی جانب سے دائرکردہ ہتک عزت کے مقدمے میں کنگنا رناوٹ کی جانب سے درخواست خارج کرنے کی استدعا مستردکردی ہے۔

جاوید نے 2020میں کنگنا کے خلاف شکایت درج کرواتے ہوئےکہا تھا کہ اداکارہ نے ٹیلی ویژن پران کے خلاف ہتک آمیز بیانات دیے جو کہ عام لوگوں کی نظر میں انہیں (جاوید اختر) بدنام کرنے کی واضح مہم ہے۔

اس کیس میں اندھیری کی ایک عدالت نے مارچ میں کنگنا کے قابل ضمانت وارنٹ جاری کیے تھے ، اداکارہ کے عدالت میں پیش ہونے پر ان کی درخواست ضمانت منظور کرلی گئی تھی۔

جاوید نے گزشتہ سال نومبر میں کنگنا کے خلاف شکایت درج کرواتے ہوئے کہا تھا کہ اداکارہ کے جھوٹے بیانات نے ان کی ساکھ کو نقصان پہنچایا ہے۔

کنگنا نے جاوید پر الزام عائد کیا تھا کہ انہوں نےاداکارہ کو ہریتک روشن کے ساتھ تعلقات کو ظاہرنہ کرنے کی دھمکی دی تھی اور سشانت سنگھ راجپوت کی موت کے بعد ' بالی ووڈ میں موجود گروہ' کا ذکر کرتے ہوئے جاوید اخترکے نام کا ذکر کیا تھا۔

ادکارہ نے ویڈیو پیغام میں بھی کہا تھا کہ بالی وڈ کے پروڈکشن ہاؤسز، فلمسازوں اور بڑے اداکاروں نے ایسے حالات پیدا کیے کہ سشانت خودکشی پر مجبورہوگیا۔ ماضی میں وہ بھی ایسے حالات سے گزر چکی ہیں۔ کنگنا کے مطابق معروف فلمساز و شاعرجاوید اختر نے ماضی میں انہیں گھر پر بلاکر فلمساز راکیش روشن اور انکے بیٹے ہریتک روشن سے معافی مانگنے کے لیے دباؤ ڈالا تھا۔

اداکارہ نے دعویٰ کیا تھا کہ ' جاوید اختر نے دھمکی دی تھی کہ اگر معافی نہیں مانگی تو وہ خاندان مجھے جیل بھجوا دے گا یا پھریسے حالات پیدا کردیے جائیں گے کہ میرے پاس خودکشی کے علاوہ کوئی راستہ نہیں بچے گا '۔

اس سے قبل ماضی میں رومانوی تعلقات رکھنے والے کنگنا اور ہریتک کے درمیان 2017 میں شدید اختلافات کی خبریں سامنے آئی تھیں اور دونوں جانب سے ایک دوسرے پرسنگین الزامات عائد کیے گئے تھے۔

hrithik roshan

Kangna Ranaut

javed akhtar

Tabool ads will show in this div