بی فوریو کمپنی کے مالک کی عبوری ضمانت میں توسیع

ڈی جی نیب راولپنڈی نے معافی مانگ لی

سپریم کورٹ نے نیب کو بی فور یو کمپنی کے مالک سیف الرحمان نیازی کی گرفتاری سے روکتے ہوئے ملزم کی عبوری ضمانت میں دو ہفتے تک توسیع کر دی۔

بدھ یکم ستمبر کو بی فور یو کمپنی کے مالک سیف الرحمان نیازی کی ضمانت کے کیس کی سماعت ہوئی۔

عدالت نے ملزم کو 20لاکھ روپے زرِضمانت جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے نیب کے ساتھ تعاون کرنے کا حکم دیا۔ ہدایت کی کہ ملزم کے عدم تعاون پر نیب فوری آگاہ کرے۔

ملزم سیف الرحمان نیازی نے کارروائی کے خلاف نیب کا دائرہ اختیار چیلنج کیا، جس پر سپریم کورٹ نے ریمارکس دیے کہ بادی النظر میں نیب کا دائرہ اختیار بنتا ہے۔

عدالت نے نیب سے ملزم کے خلاف شواہد کی تفصیلات مانگ لی ہیں۔ سپریم کورٹ نے ریمارکس دیے کہ نیب کا احاطہ سے ملزم گرفتار کرنا عدالتی وقار کے خلاف ہے۔ نیب ازخود اپنے افسران کے خلاف کارروائی کرکے رپورٹ پیش کرے اور رپورٹ کی روشنی میں توہین عدالت کارروائی کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کریں گے۔

قائم مقام چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ملزم کے خلاف کیس کا تعین کیے بغیر گرفتاری ظلم ہے اس لیے مکمل حقائق سامنے آنے تک گرفتاری مناسب نہیں۔ وائٹ کالر کرائم ہے کوئی لاش نہیں پڑی ہوئی جو فوری گرفتار کرنا ہے۔

سیف الرحمان نیازی کے وکیل لطیف کھوسہ نے عدالت کو بتایا کہ ملزم کے خلاف کوئی شکایت کنندہ ہے اور نہ ہی وہ عوامی عہدیدار۔

دوران سماعت فراڈ کیس میں عدالتی احاطہ سے گرفتاری پر ڈی جی نیب راولپندی عرفان منگی نے سپریم کورٹ سے معافی مانگ لی۔

ڈی جی نیب راولپندی عرفان نعیم منگی نے کہا کہ پہلے کبھی ایسا بلنڈر نہیں ہوا اور نہ آئندہ ہوگا، جس پر قائم مقام چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ فی الحال آپکی معافی قبول نہیں کر رہے، اپنا مؤقف لکھ کر دیں پھر فیصلہ کریں گے۔

قائم مقام چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ منگی صاحب آپ تو انجینئر نہیں ہیں؟ جس پر عرفان منگی نے عدالت کو بتایا کہ میں 17 سال سے نیب میں ہوں۔ ملزم ہائیکورٹ سے بھاگ کر گزشتہ 5روز سے بااثر شخص کے گھر چھپا رہا۔

ڈی جی نیب نے کہا کہ ملزم نے 116 ارب کا فراڈ کیا اور اس کیس کے 4لاکھ سے زیادہ متاثرین ہیں۔ خدشہ تھا ملزم ایران فرار ہو جائے گا۔

قائم مقام چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ اگر عدالتی دروازہ پر ظلم ہوگا تو کون عدالت آئے گا، عدالت کا دروازہ معصوم اور ملزم سب کے لیے کھلا ہوتا ہے۔

ڈی جی نیب نے مزید بتایا کہ سیف الرحمان نیازی کی 4 بیویاں ہیں اور ملائیشیا میں موجود اہلیہ فراڈ کی ماسٹر مائنڈ ہے۔ اسلام آباد ہائیکورٹ سے فیصلہ سنے بغیر ہی ملزم فرار ہوگیا۔

سپریم کورٹ نے کیس کی مزید سماعت دو ہفتے تک ملتوی کر دی۔

B4U FRAUD

Tabool ads will show in this div