مزید 5لاکھ افغان پناہ گزین بن جائیں گے،اقوام متحدہ

پانچ سال سےچھوٹےبچوں کی نصف آبادی خوراک سےمحروم
Aug 28, 2021

افغانستان ميں بچوں سميت ہزاروں دربدر خاندان خوراک اور جائے پناہ کی تلاش ميں ہيں جس پر اقوام متحدہ کو خدشہ ہے کہ سال کے آخر تک مزيد پانچ لاکھ افغان پناہ گزين بن جائيں گے جبکہ اس وقت پونے 2 لاکھ سے زائد افغان مدد کے منتظرہيں۔ اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق ايک کروڑ 80 لاکھ افغان شہریوں کو مدد کی اشد ضرورت ہے جبکہ 5 سال سے کم عمر 50 فيصد سے زائد بچوں کوبنيادی خوراک نہيں مل رہی۔ انسانی بحران کا ايک منظر کابل ايئرپورٹ پارک ميں بھی دیکھا جا سکتا ہے جہاں انخلا کی اميد ميں بہت سے خاندانوں نے خيمہ بستی بسالی ہے۔ ورلڈ فوڈ پروگرام نے کہا ہے کہ افغانستان کو فوری طور پرخوراک کے ليے 20 کروڑ ڈالرامداد کی ضرورت ہے۔ دریں اثناء طالبان نے کہا ہے کہ افغانستان ميں انسانی بحران سے نمٹنے کے ليے اقوام متحدہ سے ہرطرح کے تعاون پرتيار ہيں۔

UNITED NATION

AFGHAN TALIBAN

Tabool ads will show in this div