میزائل حملے ميں25افراد ہلاک،حکیم اللہ کی ہلاکت کی تصدیق نہیں،وزارت داخلہ

Nov 30, -0001

اسٹاف رپورٹ
میران شاہ:  شمالی وزیرستان میں میزائل حملے میں پاکستان کو انتہائی مطلوب کالعدم تنظیم کا سربراہ حکیم اللہ محسود پچیس ساتھیوں سمیت مارا گیا۔ غیر ملکی خبر ایجنسی نے دعویٰ کیا ہے کہ مرنے والوں میں حکیم اللہ کا محافظ طارق محسود اور ڈرائیور عبداللہ  محسود بھی شامل ہیں۔

شمالی وزیرستان کے ہیڈ کوارٹر میران شاہ کے قریبی علاقے ڈانڈے درپہ خیل میں ایک میزائل حملے میں حکیم اللہ محسود پچیس قریبی ساتھیوں سمیت مارا گیا۔ ہلاک ہونے والوں میں حکیم اللہ محسود کا ذاتی محافظ طارق محسود اور ڈرائیور عبداللہ محسود بھی شامل ہے۔

غیر ملکی خبر ایجنسی رائٹرز کے مطابق، جس جگہ میزائل حملہ ہوا وہ طالبان کا ہیڈ کوارٹر سمجھا جاتا ہے۔۔ پاکستان کے سیکیورٹی اور انٹیلی جنس ذرائع کے علاوہ خود طالبان نے بھی حکیم اللہ محسود کی ہلاکت کی تصدیق کردی ہے اور اعلان کیا ہے کہ نماز جنازہ آج سہہ پہر تین بجے ہوگی۔

جس علاقے میں حملہ ہوا پاکستان کے مذاکراتی وفد نے ہفتہ کو اسی جگہ جانا تھا۔

ترجمان وزارت داخلہ نے حکیم اللہ محسود کی ہلاکت کی تصدیق نہیں کی اور کہا ہے کہ اس بارے میں معلومات اکٹھی کی جارہی ہیں۔ دفتر خارجہ کے ترجمان نے شمالی وزیرستان میں میزائل حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ میزائل حملے ملکی سلامتی اورخود مختاری کے خلاف ہیں۔ سماء

کی

KESC

Musharraf

exercises

داخلہ

Tabool ads will show in this div