ماں کی اپنے مریض بچے کومارنے کی کوشش

بچے کے باپ کا بیوی کیخلاف قانونی کارروائی سے انکار
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/08/Sangdil-Maa-Isb-Pkg-24-08.mp4"][/video]

راولپنڈی انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں ایک خاتون نے دل کے مرض میں مبتلا اپنے 8 ماہ کے بچےکو گلا دبا کر مارنے کی کوشش کی لیکن اسپتال کے عملے نے بروقت وارڈ میں پہنچ کر معصوم کو کسی نقصان سے بچالیا۔ واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آئی ہے جس میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بچے کی ماں اسے بظاہر گلا گھونٹ کر مارنا چاہ رہی۔ اب یہ ایک ماں کی اپنے بچے کی تکلیف نہ دیکھے جانے کے باعث اسے سسکتی زندگی سے آزاد کرانے کی ایک غیر مناسب کوشش تھی یا کوئی اور بات یہ تو طے نہیں ہو سکا لیکن خاتون کے شوہر نے اپنی بیوی کو ذہنی مریضہ بتاتے ہوئے اس کے خلاف کوئی مقدمہ درج کروانے سے انکار کردیا۔ دل کےمرض کے باعث زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا 8 ماہ کا بچہ خاتون کی مذکورہ حرکت کے باعث ہاتھ پاؤں مار رہا تھا تاہم اسی دوران اسپتال کے مانیٹرنگ روم کا عملہ پہنچ گيا اور خاتون کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کردیا۔ یہ واقعہ 14 اگست کو پیش آیا تھا۔ خاتون کے شوہر کا کہنا تھا کہ ان کی اہلیہ ذہنی مریضہ ہے اور وہ ان کے خلاف کوئی قانونی کارروائی نہیں کریں گے۔ اس واقعے پر چائلڈ پروٹیکشن بیورو بھی میدان میں آ گیا جس نے بچے کو والدین سے لے کر اس کا آپریشن کروادیا تاہم ادارے کی جانب سے خاتون کے خلاف قانونی کارروائی کرنے کا عندیہ دیا گیا ہے۔ ڈسٹرکٹ آفیسر چائلڈ پروٹیکشن بیورو علی عابد نقوی کہنا ہے کہ بچہ ہوش میں آگیا ہے اور اب اس کی صحت بہتر ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ان کا ادارہ خاتون کے خلاف قانونی کارروائی کی درخواست دے گا۔

PUNJAB POLICE

Tabool ads will show in this div