کراچی سمیت سندھ بھر میں تعلیمی ادارے تاحکم ثانی بند

نوٹٰ فیکیشن جاری
Aug 22, 2021

[caption id="attachment_2350369" align="alignright" width="900"] فائل فوٹو[/caption]

کراچی سمیت صوبے بھر میں تعلیمی اداروں کو تاحکم ثانی بند کرنے کا حکم جاری کردیا گیا ہے۔

محکمہ تعلیم سندھ کی جانب سے جاری نوٹی فیکیشن کے مطابق تعلیمی اداروں کو کھولنے سے متعلق اجلاس 30 اگست کے بعد بلایا جائے گا۔ بندش کا اطلاق سرکاری اور نجی تعلیمی اداروں پر ہوگا۔

اجلاس میں کراچی سمیت سندھ بھر میں کرونا وائرس کے بھڑھتے کیسز اور کرونا کی چوتھی لہر میں شدت کا جائزہ لیا جائے گا، جس کے بعد تعلیمی ادارے کھولنے سے متعلق لائحہ عمل ترتیب دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل 20 اگست بروز جمعہ وزیراعلیٰ ہاؤس میں اجلاس سے خطاب میں وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سندھ ميں تعليمی ادارے 30 اگست سے کھليں گے۔

پیر 23 اگست سے تعلیمی ادارے کھولنے کا فیصلہ مؤخر کیا گیا تھا۔ انھوں نے یہ بھی کہا تھا کہ اساتذہ کی ويکسی نيشن کاعمل جلد مکمل ہونا چاہيے اور موجودہ صورت حال میں مزيد ايک ہفتہ اسکولز نہيں کھوليں گے۔

وزیراعلیٰ نے وضاحت دی تھی کہ ایک ہفتے کے دوران اسکول کے اساتذہ، بچوں کے والدین ویکسینیشن کروائیں۔ اسکول کی انتظامیہ اور دیگر متعلقہ افراد کو بھی ویکسینیشن کروانا ہوگی۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اسکول بھیجنے کے لیے والدین کو اپنا ویکسینیشن سرٹیفیکیٹ دکھانا ہوگا۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ بروز ہفتہ 21 اگست کو کرونا وائرس کے صورت حال کے باعث اسکولوں کے بعد تمام جامعات کو بھی مزید ایک ہفتے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ وزیر برائے جامعات اسماعیل راہو کا کہنا ہے کہ صوبہ سندھ کی تمام جامعات اور بورڈز 30 اگست سے کھلیں گے

جامعہ کراچی کے کنٹرولر امتحانات سید ظفر حسین نے سما ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ جامعہ کراچی کے تحت منعقد ہونے والے امتحانات شیڈول کے مطابق جاری رہیں گے۔

دوسری جانب پرائيويٹ اسکولز ايسوسی ايشنز نے سند حکومت کے فیصلے پر اسکول بچاؤ تحريک کا اعلان یے جبکہ اسلامی جمعیت طلباء کراچی نے بھی سندھ حکومت کے فیصلے کو تعلیم دشمن اقدام قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ والدین کا کہنا ہے کہ سب کچھ کھلا ہے تو اسکول کيوں بند ہيں۔ اسی طرح اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے بھی سندھ حکومت کے فیصلے کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

یاد رہے کہ کراچی میں کرونا کيسز ميں کمی ہورہی ہے۔ شہرقائد میں بازار دفاتر کھلے ہيں جبکہ ایس او پیز کے تحت صوبے بھر میں تقاریب کا بھی انعقاد کیا جارہا ہے۔

Tabool ads will show in this div