افغانستان ميں پُرامن انتقال اقتدارکےحامی ہيں،دفترخارجہ

پائیدارامن کیلئےعالمی برادری کردارادا کرے

دفترخارجہ نے کہا ہے کہ افغانستان ميں پُرامن انتقال اقتدار کے حامی ہيں۔

ہفتے کو اسلام آباد میں ترجمان دفترخارجہ زاہد حفیظ نے میڈیا بریفنگ میں بتایا کہ  افغان وفد نے پاکستان کا دورہ کیا جس میں وزیراعظم سے ملاقات کی۔ ترجمان زاہد حفیظ نے کہا کہ افغانستان ميں پُرامن انتقال اقتدار کے حامی ہيں۔

تحریک طالبان پاکستان کے مستقبل کے بارے میں سوال پر ترجمان نے جواب دیا کہ اس بات کو یقینی بنانا ضروری ہے کہ افغانستان کی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہ کی جائے اور دنیا افغانستان کی تعمیرو ترقی پر توجہ دے اورپائیدارامن کیلئےعالمی برادری کردارادا کرے۔اس وقت افغانستان میں کوئی حکومت نہیں جس سے تحریک طالبان پاکستان کا معاملہ اٹھائیں۔

دفترخارجہ نے سراہتے ہوئے کہا کہ ترجمان طالبان کی پہلی پریس کانفرنس مثبت ہے اور پاکستان کا یہ مؤقف ہے کہ افغانستان میں مذاکرات سے حکومت سازی ہو۔ سفارت خانے سے متعلق ترجمان نے بتایا کہ کابل میں پاکستان کا سفارت خانہ مکمل طور پر فعال ہے اور پاکستان سمیت افغانستان اور دیگر ممالک کے افراد کو ویزا مہیا کیا جارہا ہے۔

ترجمان نے یہ بھی کہا کہ عالمی برادری میں یہ سوچ مستحکم ہورہی ہے کہ افغانستان میں مکمل امن ہو۔بھارت ہو یا کوئی دوسراملک،اس کو عالمی برادری کی سوچ ملحوظ رکھنا ہوگی۔ افغانستان میں امن عمل کیلئے پاکستان تمام متعلقہ ممالک سے رابطے میں رہا اورپاکستان کے سفیر نے کابل میں افغان قیادت سے اہم ملاقاتیں کیں۔ پاکستان کا دورہ کرنے والے وفد کے اہم رہنما اسی عمل کا حصہ ہیں۔

ترجمان نے کہا کہ افغانستان کے ساتھ والی سرحدیں کھلی ہیں جو معمول کے تعلق کی نشانی ہے۔

FOREIGN OFFICE

Tabool ads will show in this div