اسلامی امارات افغانستان کا پہلا دن: تصاویرکی نظرسے

وطن چھوڑنےکیلئےکابل ائرپورٹ پرہزاروں افراد جمع
فوٹو: اے ایف پی
فوٹو: اے ایف پی
[caption id="attachment_2356864" align="alignnone" width="800"] تصاویر: اے ایف پی[/caption]

طالبان کی فتح کے بعد  امریکی سفارت کاروں کی حفاظت کے لیے فوج بھیجنے اورافغانستان سے فرارہونے والوں کے واحد ذریعے کابل ائرپورٹ پر افراتفری اور خوف وہراس کے مناظر ہیں۔

اتوار کی رات دیر گئے کابل میں داخل ہونے اور صدارتی محل پر قبضہ کرنے کے بعد طالبان نے اعلان کیا ہے کہ افغانستان میں جنگ ختم ہو چکی ہے۔ بین الاقوامی خبر رساں اداروں کی رپورٹس کے مطابق طالبان کی جانب سے "اسلامی امارات افغانستان" کے دوبارہ قیام کا اعلان متوقع ہے۔

طالبان کے دوبارہ اقتدار میں آنے کے تناظر میں افغانستان میں بڑے واقعات پر ایک نظر ڈالتے ہیں۔

لوگ افغانستان سے بھاگنے کے لیے کابل ائر پورٹ کا رُخ کررہے ہیں۔ ملک چھوڑ کرجانے والے افغان صدر اشرف غنی نے اعتراف کیا کہ باغیوں نے 20 سالہ جنگ جیت لی ہے۔

کینیڈا میں درجنوں افغانیوں نے یکجہتی کے لیے ریلی نکال کر طالبان کے اقدامات کی مذمت کی، افغان پرچم لہرائے اور ہاتھوں میں پلے کارڈز اٹھائے جن پر 'افغانستان بچائیں'  ، '؛میرے دوست اور خاندان کی مدد کریں '، اور' افغانستان میں جنگ بند کرو' جیسے نعرے درج تھے۔ ". سیکڑوں لوگوں نےعالمی برادری سے مدد کی اپیل کی۔

جرمن ائر فورس کا ائربس اے 400 ایم ٹرانسپورٹ طیارہ پیر کی صبح ہنوور کے علاقے میں ونسٹورف ایئر بیس سے روانہ ہوا جس کا مقصد افغانستان میں طالبان کی تیزی سے پیش قدمی کے پیش نظرجرمن شہریوں اور مقامی افغان فورسز کا کابل سے انخلا شروع کرنا ہے۔

پاکستانی اخبارات بھی افغانستان کے حوالے سے خبروں سے بھرے ہیں، اسلام آباد کے ایک اسٹال کی تصاویردیکھیے۔

بیجنگ میں افغانستان کے سفارت خانے کے باہر کھڑے چینی پیراملٹری پولیس آفیشل کی تصویر

طالبان امریکہ اور اس کے مغربی اتحادیوں کی طرف سے وہاں سے نکالے جانے کے 20 سال بعد کابل میں داخل ہوئے ہیں۔

KABUL

TALIBAN

Tabool ads will show in this div