کےایم سی سے سلاٹر ہاؤس کی زمین واپس لینےکا فیصلہ

سندھ انٹیگریٹڈ ایمرجنسی اینڈ ہیلتھ سروس قائم کرنے کا فیصلہ

Sindh Cabinet Meeting Khi Vo 10-08

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/08/Sindh-Cabinet-Meeting-Khi-Vo-10-08.mp4"][/video]

سندھ کابینہ نے کے ایم سی سے بھینس کالونی سلاٹر ہاؤس کی زمین واپس لينے کا فيصلہ کرليا۔

منگل 10اگست کو سندھ کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں فیصلہ کیا گیا کہ سلاٹر ہاؤس کی زمین پر بی آر ٹی ریڈ لائن کے لیے بائیو گیس پلانٹ لگایا جائے گا۔

کابینہ کی جانب سے کے ایم سی کو نیا سلاٹر ہاؤس بنانے کی ہدایت کر دی گئی۔ سندھ حکومت سلاٹر ہاؤس کے لیے متبادل مقام پر زمين فراہم کرے گی۔

دوسری جانب کراچی واٹر بورڈ نے زیر زمین پانی نکالنے پر ٹيکس لگانے کی تجویز دے دی۔

سندھ کابینہ نے سندھ انٹیگریٹڈ ایمرجنسی اینڈ ہیلتھ سروس قائم کرنے کا بھی فیصلہ کیا۔ ایس آئی ای ایچ ایس کمپنی ایس ای پی میں رجسٹرڈ ہوچکی ہے۔

میڈیکل سروس اور پیپلز امن ہیلتھ کیئر سروسز بھی ایس آئی ای ایچ ایس میں ضم ہو جائے گی۔

ایس آئی ای ایچ ایس کے لیے کابینہ نے 500ملین منظور کر لیے جبکہ ورلڈ بینک کی مدد سے مزید 200 ایمبولینس لی جا رہی ہیں اور اب یہ ایمبولینس سروس پورے صوبے میں کام کرے گی۔

Tabool ads will show in this div