کراچی میں جوبلی مارکیٹ پر غیرقانونی دکانوں کیخلاف آپریشن مکمل

کے ایم سی انسدادتجاوزات ٹیم نے تمام 164دکانیں مسمار کردیں
Jul 31, 2021

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/07/Jublee-Market.mp4"][/video]

کراچی کے علاقے جوبلی پر کے ایم سی انسداد تجاوزات ٹیم کا نالے پر قائم غیرقانونی دکانوں کے انہدام کا آپریشن مکمل کرلیا گیا، تمام 164 دکانیں مسمار کردی گئیں۔

کے ایم سی انسداد تجاوزات جنوبی کے ڈپٹی ڈائریکٹر افتخار احمد نے سماء ڈیجیٹل سے گفتگو کرتے ہوئے آپریشن کی تکمیل کی تصدیق کردی۔

انہوں نے بتایا کہ پوری جوبلی مارکیٹ ملبے کے ڈھیر میں تبدیل ہوچکی ہے، انسداد تجاوزات آپریشن کی تکمیل میں 3 روز لگے۔

افتخار احمد کا کہنا ہے کہ کراچی میں لاک ڈاؤن کی صورتحال کے باعث ابھی ملبہ اٹھانے کا کام شروع نہیں کیا گیا، یہ کام متوقع طور پر آئندہ ہفتے شروع ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ کے ایم سی کی انسداد تجاوزات ٹیم جوبلی مارکیٹ کی دکانیں مسمار کرنے کیلئے اپنی پوری صلاحیت بروئے کار لائی، مہم میں بھاری مشینری کا بھی استعمال کیا گیا۔

جوبلی مارکیٹ کراچی میں مجموعی طور پر 164 دکانیں تھیں، جن میں سے 32 دکانیں کے محکمہ انسداد تجاوزات نے چند ماہ قبل مسمار کردی تھیں۔

یکم جولائی کو جوبلی مارکیٹ کا فرش دھنس گیا تھا اور ضلعی انتظامیہ نے پوری مارکیٹ سیل کردی تھی۔ جس کے بعد کے ایم سی کے محکمہ انسداد تجاوزات نے دکانداروں کو مارکیٹ خالی کرنے کے نوٹس جاری کئے اور 28 جولائی کو دکانیں مسمار کرنے کے کام کا آغاز کیا تھا۔

جوبلی مارکیٹ کے انہدام کے پہلے روز دکانداروں نے احتجاج کیا، ضلعی انتظامیہ اور کے ایم سی کے عملے کیخلاف شدید نعرے بازی بھی کی تھی۔ آپریشن جاری رکھنے اور مشتعل مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے پولیس کی جانب سے لاٹھی چارج بھی کیا گیا۔

جوبلی مارکیٹ کراچی میں جوبلی سنیما کے مقابل تقریباً 30 سال قبل نالے پر تعمیر کی گئی تھی۔

Tabool ads will show in this div