سندھ حکومت ایس اوپیز پرعمل کرانے پرتوجہ دے، گورنر سندھ

لاک ڈاؤن سے دیہاڑی دارطبقہ زیادہ متاثر ہوتاہے، عمران اسماعیل
Jul 31, 2021

گورنر سندھ عمران اسماعیل نے حکومت سندھ سے لاک ڈاؤن کے فیصلے پر نظرثانی کا مطالبہ کردیا۔ کہتے ہیں کہ صوبائی حکومت ایس او پیز پر عمل کرانے پر توجہ دے، صرف پوليس ہی نہيں ڈی سی اور اے سی گردی بھی ہورہی ہے۔

سندھ حکومت نے کراچی سمیت صوبہ بھر میں کرونا وائرس کے ڈیلٹا ویرینٹ کے کیسز میں اضافے کے باعث آج (31 جولائی) سے 8 اگست تک سخت لاک ڈاؤن نافذ کردیا، اس دوران بہت سے شعبوں کو بند کردیا گیا ہے۔

گورنر سندھ عمران اسماعيل نے کراچی ميں ایک تقريب سے خطاب کرتے ہوئے سندھ حکومت پر کڑی تنقید کی۔ ان کا کہنا تھا کہ وزيراعلیٰ سندھ نے وفاقی وزیر اسد عمر سے رابطہ کيا تھا، سندھ حکومت ہميں اپنا مانے تو مدد کرنے کو تيار ہيں، صوبائی حکومت ايس او پيز پر عمل کرانے پر توجہ دے، پابندياں لگنے کے بعد کئی صنعتکاروں نے فون کيا، ميں کيا جواب دوں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ لاک ڈاؤن کے فيصلے پر نظرثانی کرے، لاک ڈاؤن سے ديہاڑی دار طبقہ متاثر ہوتا ہے، بندش کرونا پر قابو پانے کا حل نہيں، سندھ حکومت نے کرفيو کی طرز پر لاک ڈاؤن لگاديا، پاکستان ميں ايسا لاک ڈاؤن کہيں نہيں ہوا۔

عمران اسماعیل نے الزام لگایا کہ پولیس کے ساتھ ساتھ ڈی سی اور اے سی گردی بھی ہورہی ہے، سندھ ميں ويکسين بيچی جارہی ہيں۔

واضح رہے کہ 25 جولائی کو کرونا وائرس سے متعلق سندھ کے فوکل پرسن ڈاکٹر سہیل رضا کی سربراہی میں کراچی کے علاقے خالد بن ولید روڈ پر ایک گھر پر چھاپہ مارا گیا تھا، جہاں فائزز ویکسین غیر قانونی طور پر فروخت کی جارہی تھی، ایک ملزم کو بھی گرفتار  کیا گیا، جس کی شناخت محمد علی کے نام سے کی گئی تھی۔

coronaviruspakistan

LOCKDOWNS

GOVERNOR SINDH IMRAN ISMAEL

تبولا

Tabool ads will show in this div

تبولا

Tabool ads will show in this div