نورمقدم قتل کے ملزم کے حوالے سے نئے انکشافات

ملزم نشے کی پارٹیز بھی کرواتا تھا

نور مقدم قتل کیس کے ملزم ظاہر جفعر سے متعلق پولیس نے انکشاف کیا ہے کہ وہ اسلام آباد میں مبینہ طور پر نشے کی پارٹیاں بھی منعقد کرواتا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ 23 فروری 2019 کو ظاہر جعفر کے گھر پارٹی میں شریک 3 لڑکیاں زیادہ نشے کے باعث ٹریفک حادثے میں جاں بحق ہوگئی تھیں۔ وہ لڑکیاں رات 2 بجے ظاہر جعفر کے گھر پارٹی سے واپس آرہی تھیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم ظاہر جعفر کئی بار اپنے والد کو بھی قتل کرنے کی کوشش کر چکا ہے، جب کہ مجرمانہ سرگرمیوں کے باعث والدین نے اسے زبردستی برطانیہ بھی منتقل کیا تھا۔

Tabool ads will show in this div