کراچی: سپريم کورٹ کے احکامات پرغيرقانونی تعميرات کے خلاف آپريشن

پوليس کی بھاری نفری بھی موجود
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/06/Aladin-Park-3rd-Day-Operation-Khi-Aslive-17-06.mp4"][/video]

سپريم کورٹ کے احکامات  پر کراچی کے راشد منہاس روڈ پر غير قانونی تعميرات کے خلاف آپريشن جاری ہے۔

کراچی میں 2 روز سے الہٰ دین پارک اور پویلین اینڈ کلب کو گرایا جا رہا ہے۔ اس دوران دکان داروں کی جانب سےاحتجاج بھی کیا گیا اورآپريشن کے دوران جھڑپيں بھی ہوئیں۔الہٰ دین پارک میں 1999 سے قائم مارکیٹ کو گرانے کے کام میں انسدادِ تجاوزات عملے کی ٹیمیں ہیوی مشینری کے ساتھ آپريشن ميں مصروف ہیں۔ اس دوران پوليس کی بھاری نفری بھی موجود ہے۔

گذشتہ روز الہ دین پارک کے شاپنگ مال کا کوریڈور،پویلین اینڈ کلب کا مرکزی گیٹ، سیکورٹی چيک پوائنٹ اور دیواریں گرائی گئیں تھی۔کے ایم سی حکام کے مطابق الہٰ دین پارک کی 400 سے زائد دکانوں کو گرانے میں ایک ہفتے سے زيادہ وقت لگے گا۔

پویلین اینڈکلب ایک ہفتے میں مکمل گرانے کا حکم

پیر 14جون کو سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں تجاوزات سے متعلق کیسز میں چیف جسٹس گلزار احمد نے الہ دین پارک سے متصل پویلین اینڈ کلب کوغیر قانونی قرار دیا۔عدالت نے ریمارکس دیے کہ غیر قانونی طور پر زمین کو کنورٹ کرکے کمرشل کردیا گیا، لہٰذا پولیس اور رینجرز کی مدد سے فوری کارروائی کی جائے۔

منگل کو تحریری فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پویلین اینڈ کلب اور شاپنگ ایریا غیرقانونی ہے اس لیے الہ دین پارک کو فوری اصل شکل میں بحال کیا جائے۔

پویلین اینڈ کلب، شاپنگ ایریا گرانے سے متعلق تحریری حکم نامہ جاری

فیصلےمیں کہا گیا کہ غیر قانونی تعمیرات مسمار کرکے ملبہ فوری ہٹایا جائے جبکہ ایڈمسنٹریٹر کے ایم سی اور کمشنر کراچی 2روز میں کارروائی مکمل کریں۔

Aladin Park

PAVILION END CLUB

Tabool ads will show in this div