کالاش: جنگل میں آتشزدگی سے کئی درخت جل گئے

آگ کو لگے تین روز گزر گئے

CHITRAL FOREST FIRE 13-06

وادی کلاش کے علاقے بریر کے جنگلات میں 100 ایکڑ اراضی پر پھیلے درختوں پر گذشتہ تین روز سے آگ لگی ہوئی ہے۔

چترال کے ضلعی کمشنر کے مطابق آگ لگنے کے فوری بعد آس پاس کے علاقوں سے لوگوں نے حکام کو اطلاع دی۔ محکمہ جنگلات خیبر پختونخوا کا عملہ اور ریسکیو 1122 کی ٹیم جائے وقوعہ پر پہنچ کر آگ بجھانے کی کوشش کر رہی ہیں۔

ضلعی کمشنر نے سماء ڈیجیٹل کو بتایا کہ آگ لگنے کی وجہ تاحال معلوم نہیں ہوسکی۔ ہماری پہلی کوشش جلد از جلد آگ بجھانا ہے کیونکہ آگ دوسرے درختوں کی بھی لپیٹ میں لے رہی ہے۔

علاقے میں چترال لیویز اور پولیس کو تعینات کر دیا گیا ہے۔

آتشزدگی کی وجہ سے جنگل میں جانور خصوصاً پرندوں کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہوگئے ہیں۔ آگ نے جنگل میں دیودار، چلغوزے اور شاہ بلوط کے کئی درخت جلا دیے ہیں۔

ڈبلیو ڈبلیو ایف کے وائلڈ لائف منیجر سعید الاسلام نے بتایا کہ ان جنگلات میں مارخور، تیندوے، برفانی تیندوے اور لومڑی سمیت بہت سے جانور رہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ان جانوروں میں سے 10 فیصد خطرے سے دوچار ہیں کیونکہ لومڑی اور خرگوش جیسے رات کے جانوروں کو آگ لگنے کا سب سے زیادہ خطرہ ہے۔ بڑی بلیاں اس آگ سے بچ سکتی ہیں لیکن پرندوں اور زمین کے اندر سرنگ بناکر رہنے والے جانوروں کو خطرہ لاحق ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کالاش کے عوام کی روزی روٹی چلغوزے پر منحصر ہیں اور وہ سارا سال انتظار کرکے اس خشک پھل کو نہ صرف اپنے علاقوں میں بلکہ ملک کے دیگر شہروں میں بھی فروخت کرتے ہیں۔

جنگل میں آگ کیوں لگی؟

وائلڈ لائف ڈائریکٹر نے بتایا کہ آگ لگنے کی دو وجوہات ہوسکتی ہیں۔

جنگل میں لگی آگ کی ایک سب سے عام وجہ خشک اور گرم موسم کی وجہ سے شاخوں میں رگڑ ہوسکتا ہے۔ دیودار کے درخت والے جنگلات، جو عام طور پر شمالی علاقوں میں پائے جاتے ہیں، ان میں سوئی کی طرح کے پتے ہوتے ہیں جن میں تیل کا جزو ہوتا ہے۔

درختوں کے پتے آسانی سے گرم ہوسکتے ہیں اور جب جنگلات میں آگ لگتی ہے تو ایسے پتوں کے باعث آگ کو روکنا بہت مشکل ہوتا ہے۔

اس کی ایک اور وجہ سگریٹ بھی ہوسکتی ہے۔ وائلڈ لائف قوانین کے مطابق کوئی بھی جو وائلڈ لائف پارک یا کنزرویشن ایریا میں جاتا ہے وہ سگریٹ، لائٹر یا ماچس نہیں رکھ سکتا ہے۔

ورلڈ وائلڈ لائف فنڈ کی ایک رپورٹ کے مطابق 2020 میں دنیا بھر میں جنگل میں لگنے والی آگ میں ریکارڈ توڑ 13فیصد اضافہ ہوا ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جنگل کی آگ کی بڑھتی ہوئی تعداد جنگلات کی کٹائی اور آب و ہوا کی تبدیلی کی وجہ سے ہے۔

KALASH

Tabool ads will show in this div