خواجہ سراؤں کوملازمت دینےپر کمپنیز کیلئے خصوصی مراعات

بنگلادیش میں 15 لاکھ خواجہ سرا افراد ہیں
فوٹو: اےایف پی
فوٹو: اےایف پی
فوٹو: اےایف پی

بنگلاديش ميں خواجہ سرا افراد کو ملازمتین دینے والی کمپنيوں کےليے ٹيکسوں ميں خصوصی مراعات کا اعلان کرديا گيا۔

بنگلادیشی وزير خزانہ مصطفٰی کمال نے سن 2021، 2022 کا بجٹ پيش کرتے ہوئے خواجہ سرا افراد کےلیے مراعات کا اعلان کيا۔ اگر کسی کمپنی کے 10 فيصد يا مجموعی طور پر 100 ملازمين خواجہ سرا ہوئے تو اس کمپنی کو ان تمام کی تنخواہوں کا 75 فيصد حصہ واپس کرديا جائے گا۔

بنگلادیش میں تنخواہوں کے علاوہ ایک دوسرے متبادل کے طور پر ایسی کمپنياں 5 فيصد کم ٹيکس ادا کر سکتی ہيں۔

بنگلادیشی وزير خزانہ کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے اقدام خواجہ سرا شہریوں کے سماجی اور معاشی انضمام میں بہتری کے ليے اٹھايا گيا ہے۔

خواجہ سرا حقوق گروپ سداکالو ہیجرا کے صدر انونیا بنک نے کہا کہا کہ ’یہ خبر ہمارے لیے بہت اچھی ہے لیکن ہم اسے کسی سیاسی پروپیگنڈے کی نظر نہیں کرنا چاہتے‘۔

رپورٹ کے مطابق بنگلادیش میں ایک اندازے کے مطابق 15 لاکھ خواجہ سرا افراد ہیں، جنھیں بےحد تفریق اور تشدد کا سامنا ہے۔

BANGLADESH

MUSTAFA KAMAL

Anonnya Banik

Tabool ads will show in this div