خیبرپختونخوا:وہ علاقے جہاں ابتک کرونا سے کوئی موت نہیں ہوئی

ان علاقوں میں کیسز کی تعداد بھی نسبتاً کم ہے
May 24, 2021

خیبر پختونخوا میں کرونا وائرس سے متاثر ہونے والوں کی کل تعداد ایک لاکھ 30 ہزار سے تجاوز کر چکی ہے جبکہ اس وائرس کے باعث اب تک 3 ہزار 950 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں۔

اس وبا سے سب سے زیادہ متاثرہ علاقوں میں صوبائی دارالحکومت پشاور سرفہرست ہے جبکہ دوسرے نبمر پر سوات آتا ہے لیکن صوبے میں کچھ اضلاع ایسے بھی ہیں جن میں کرونا کی وجہ سے اب تک کوئی موت رپورٹ نہیں ہوئی۔

محکمہ صحت خیبرپختونخوا کے مطابق صوبے میں اب تک کرونا وائرس سے ایک لاکھ 20 ہزار افراد صحت یاب ہوچکے ہیں جبکہ فعال کیسز کی تعداد 6 ہزار 200 ہے۔

محکمہ صحت کے اعدادوشمار کے مطابق خیبر پختونخوا میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید 470 کرونا کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ مہلک وائرس نے آج  26 افراد جانیں لے لیں جبکہ سرکاری ویب سائٹ کے مطابق  گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران صوبہ بھر میں 470 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں

محکمہ صحت خیبر پختونخوا کے مطابق صوبہ بھر میں تقریبا 20 ہزار افراد کرونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسین کی دونوں خوراکیں لے چکے ہیں جبکہ 45 ہزار سے زائد افراد کو ابھی سنگل  ڈوز لگی ہے۔

تاہم خیبر پختونخوا کے 4 اضلاع ایسے بھی ہیں جہاں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد باقی اضلاع کے نسبت انتہائی کم ہے جبکہ وہاں وبا کے آغاز سے اب تک اس وائرس سے کوئی موت رپورٹ نہیں ہوئی ہے۔

ان اضلاع میں ٹانک، اپر کوہستان، لوئر کوہستان اور تورغر شامل ہیں جہاں پر اب تک ایک بھی فرد کرونا کی وجہ سے جاں بحق نہیں ہوا ہے جبکہ مذکورہ اضلاع میں کرونا کے مجموعی کیسز کی تعداد ایک ہزار 22 ہیں۔

مذکورہ اضلاع میں ٹیسٹ کم ہورہے ہیں یا ایس او پی پر عملدرآمد زیادہ؟

 ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ٹانک ڈاکٹر احسان نے سماء ڈیجیٹل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے روز اول سے ہی کرونا ایس او پی پر عملدرآمد کے لئے مربوط منصوبہ بندی کی تھی مؤثر لاک ڈاؤن لگایا اور کمیونٹی موبلائزرز کا ایک گروپ تشکیل دیا جس نے گھر گھر جاکر لوگوں کو وبا سے متعلق آگاہی دی۔

ڈاکٹر احسان کا کہنا تھا کہ تمام حکومتی اقدامات میں علاقہ عمائدین سمیت تمام اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لیا گیا اور 42 رکنی علماء کمیٹی بھی تشکیل دی گئی جنہوں نے مساجد میں اعلانات اور خطبات سے لوگوں کو کرونا ایس او پیز پر عملدرآمد اور احتیاط کی تلقین کی۔

انہوں نے کہا کہ اب تک ضلع بھر میں 339 کیسز رپورٹ ہوئے ہے جن میں اس وقت صرف 11 کیسز فعال ہیں جبکہ باقی تمام افراد صحت یاب ہوکر گھروں کو جا چکے ہیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ضلع کے موجودہ تمام مریضوں کی حالت بھی خطرے سے باہر ہے۔

ڈی ایچ او ڈاکٹراحسان کا مزید کہنا تھا کہ ہم روزانہ کی بنیاد پر 150 ٹیسٹ کررہے ہیں مگر کسی مثبت کیس کی صورت میں ہم مریض کے ساتھ رابطے میں رہنے رہنے والے کم سے کم 15 افراد کے ٹیسٹ ضرور کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مریضوں کو ہم اسپتال کے بجائے گھروں میں قرنطینہ کرنے کو ترجیح دیتے ہیں کیونکہ اسپتالوں میں وہ تنہائی میں رہ کر نفسیاتی اور دیگر پریشانیوں کے باعث ان کی حالت بگڑ جاتی ہے تاہم ایسی صورت میں ہم ان کے اہل خانہ کو مروجہ طریقہ کار کے مطابق تربیت دیتے ہیں۔

ضلع میں جاری ویکسی نیشن سے متعلق انکا کہنا تھا کہ اب تک 2 ہزار 2 سو سے زائد افراد کو ویکسین لگائی جاچکی ہے اور ہماری کوشش ہے کہ اب اس تعداد کو بڑھائی جائیں اسکے لیے عوام میں بھی ویکسین کی اہمیت سے متعلق ایک مہم بھی چلائی جارہی ہے۔

ملک بھر میں کورونا وائرس کی تازہ صورتحال

ملک بھر میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 3 ہزار 60 کرونا کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ کرونا سے 57 افراد زندگی کے بازی ہار گئے۔ ملک میں کرونا کے مجموعی کیسز 9 لاکھ 3 ہزار سے زائد ہوگئی جبکہ مجموعی اموات کی تعداد 20 ہزار 308 تک پہنچ گئی۔

این سی او سی کے مطابق ملک بھر میں تقریبا 8 لاکھ 20 ہزار سے زائد افراد اب تک کرونا سے صحت یاب ہوچکے ہیں جبکہ فعال کیسز کی تعداد تقریبا 70 ہزار تک پہنچ گئی ہیں۔

یاد رہے کہ کرونا عالمی وباء سے اب تک دنیا بھر میں 16 کروڑ 75 لاکھ 34 ہزار سے زائد افراد زائد افراد متاثر ہوچکے ہیں جبکہ اب تک یہ وباء 43 لاکھ 78ہزار سے زائد لوگوں کی جانیں لے چکا ہیں۔

KPK

COVID-19

COVID VACCINE

Tabool ads will show in this div