لیگی رہنما جاوید لطیف کوجوڈیشل ریمانڈ پرجیل بھیج دیا گیا

پنجاب کے لوگوں کوغدار قرار ديا جا رہا ہے۔

لاہور کی مقامی عدالت نے ریاست مخالف مبینہ بیان کے مقدمے میں پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما جاوید لطیف کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیجتے ہوئے چالان داخل کرنے کی ہدایت کردی ہے۔

بدھ کو مسلم ليگ نون کے رہنما جاوید لطیف کو لاہور ماڈل کچہری میں پیشی کے لئے بکتربند گاڑی میں سخت سیکورٹی میں لایا گیا۔ احاطہ عدالت میں کارکنان نے جاويد لطيف کے حق ميں بھرپورنعرے بازی کی۔

اس موقع پرجاوید لطیف نے گفتگو کرنا چاہی توسیکیوریٹی اہلکاروں نے انہیں روک دیا جس پر جاوہد لطيف نے کہا کہ اس طرح میں نہیں جاؤں گا،یہ غلط بات ہے۔

پیشی کےموقع پرماڈل ٹاؤن کچہری آنے والا راستہ بند کردیا گیا جبکہ پولیس لیگی کارکنان کو بھی روکتی رہی۔

جاويد لطيف نےعدالت ميں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ميں عدالت سے پوچھتا ہوں کہ ميرا قصور کيا ہے،پنجاب کے لوگوں کوغدار قرار ديا جا رہا ہے۔

رکن قومی اسمبلی جاويد لطيف کو 14 روزہ جسمانی ريمانڈ مکمل ہونے پرعدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔

عدالت نےجاوید لطیف کا چالان 26 مئی تک پیش کرنے کی ہدایت کردی۔

JAVED LATIF

Tabool ads will show in this div