کالمز / بلاگ

آکسیجن

سو لفظوں کا کالم

وہ بیڈ پر تڑپ رہا تھا، جیسے سانسیں پوری ہوچکی ہوں، لیکن زندگی ابھی باقی ہو۔

اس کو سارے بدن کی قوت اکٹھی کرنی پڑتی، پھر جاکر کہیں ایک سانس کی بھیک ملتی۔

ڈاکٹر صاحب راؤنڈ پر آئے تو رپورٹ پر حیرانگی بھری نظر ڈالی۔

 رپورٹس تو ساری کلئیر ہیں، لیکن مرض کا سمجھ نہیں آرہا، ڈاکٹر کی جونئیر ڈاکٹر کے ساتھ سر گوشی۔

ایسے لگ رہا ہے جیسے سانسیں کسی نے چھین لی ہوں۔

مریض کو دیکھ کر اسپتال کا مینجر بولا، یہ تو وہی اسلم صاحب ہیں، ’شہر میں سب سے مہنگے آکسیجن ڈیلر‘۔

OXYGEN

COVID NEWS

Tabool ads will show in this div