سینیٹ الیکشن کیخلاف یوسف رضا گیلانی کی انٹرا کورٹ اپیل دائر

اسلام آباد ہائیکورٹ کے1 رکنی بینچ نے یوسف رضا گیلانی کی درخواست مسترد کی تھی

سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر یوسف رضا گیلانی نے اسلام آباد ہائی کورٹ کے ایک رکنی بینچ کے فیصلے کو چیلنج کردیا ہے۔

جمعرات کو چئیرمین سینیٹ الیکشن کیخلاف یوسف رضا گیلانی نے انٹرا کورٹ اپیل دائرکردی۔ انٹراکورٹ اپیل فاروق ایچ نائیک،جاوید اقبال وینس اور بیرسٹرعمر شیخ کے ذریعے دائرکی گئی۔

یوسف رضا گیلانی کی درخواست میں اپیل کی گئی ہے کہ 7ووٹوں کو غلط بنیاد پرمسترد قرار دیا گیا۔عدالت 1 رکنی بینچ کے فیصلے کو کالعدم قرار دے اور پریزائیڈنگ افسرکیجانب سے7ووٹ مسترد کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے۔

چوبیس مارچ کواسلام آباد ہائیکورٹ نے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے چیئرمین سینیٹ کیلئے متفقہ امیدوار یوسف رضا گیلانی کی مسترد شدہ ووٹوں کیخلاف درخواست ناقابل سماعت قرار دیا تھا۔

اپنے 13 صفحات پر مشتمل تحریری فیصلے میں کہنا تھا کہ عدالت توقع رکھتی ہے کہ پارلیمنٹ کی بالادستی کو یقینی بنایا جائے گا اورپارلیمنٹ کے مسائل پارلیمنٹ کےاندرہی حل کئےجائیں گے۔

چیئرمین سینیٹ الیکشن، یوسف رضاگیلانی کی درخواست ناقابل سماعت قرار

اسلام آباد ہائیکورٹ نے مزید لکھا کہ آرٹیکل 69 کےتحت عدالت اس معاملےمیں مداخلت نہیں کرسکتی، چیئرمین سینیٹ کا الیکشن ایوان بالا کا اندرونی معاملہ ہی ہے، الیکشن کا سارا عمل ہائیکورٹ کے دائرہ اختیار سے باہر ہے۔

چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کیلئے ایوان بالا میں 12 مارچ کو پولنگ ہوئی تھی، جس میں یوسف رضا گیلانی کو ملنے والے 7 ووٹ اراکین کی جانب سے غلط مہر لگانے کے باعث پریزائیڈنگ افسر کی جانب سے مسترد کردیئے گئے تھے اور صادق سنجرانی42 کے مقابلے میں 48 ووٹ لے کر کامیاب قرار پائے تھے۔

yousaf raza gillani

Tabool ads will show in this div