نون لیگ نے پی ڈی ایم کو ہائی جیک کرلیا،اعتزاز احسن

اے این پی کوشوکاز دے کر اتحاد ختم کردیاگیا،امیرحیدرہوتی

پیپلزپارٹی کے رہنما چوہدری اعتزاز احسن نے عوامی نیشنل پارٹی کی پی ڈی ایم سے علیحدگی کے فیصلے کو درست قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ نون لیگ نے اس اپوزیشن اتحاد کو ہائی جیک کرلیا ہے۔

سماء کے پروگرام 7سے8 میں گفتگو کرتے ہوئے اعتزاز احسن کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم پارٹیوں کا الحاق نہیں بلکہ ایک اتحاد ہے جہاں کوئی کسی کے ماتحت نہیں کہ کسی اتحادی کو اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کردیا جائے۔

اعتزاز احسن نے کہا کہ شاہد خاقان وضاحت مانگنے والے کون ہوتے ہیں انہیں کون اور کیوں وضاحت دے گا کیوں کہ سیاسی جماعتیں صرف اپنے کارکنوں سے وضاحت طلب کرسکتی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ مریم نواز میں صبر اور تحمل نہیں ہے کیا کبھی کسی نے سنا ہے کہ کسی اتحادی پارٹی کو اظہار وجوہ کا نوٹس دیا گیا ہو۔

پییپلز پارٹی کے رہنما کا کہنا تھا کہ محمد زبیر نے خفیہ ملاقاتیں کیں کیا نون لیگ نے بتایا کہ اس دوران ان کی کیا چیت ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ مریم نواز کی کوشش اور خواہش ضرور ہوگی کہ وہ باہر جائیں لیکن لگتا نہیں انہیں جانے دیا جائے گا تاہم اس حکومت کا کوئی بھروسہ بھی نہیں کیوں کہ یہ یوٹرن کی حکومت ہے۔

اعزاز احسن کا کہنا تھا کہ نوازشریف نے کھبی بھی بیک ڈور رابطے منقطع نہیں کیے وہ جب جیل میں تھے اس وقت بھی رفیق حریری، بل کلنٹن اور قطریوں کے ساتھ رابطے میں تھے اور کسی کو پتہ بھی نہیں لگنے دیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ نواز شریف کے وکیل تھے لیکن پھر بھی کلثوم نواز نے گھر آ کے کہا کہ ان لوگوں نے کوئی معاہدہ نہیں کیا جبکہ صرف 3 دن بعد ہی نواز شریف شاہی جہاز میں بیرون ملک چلے گئے۔

جہانگیر ترین کی پیپلزپارٹی میں شمولیت سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ہمارے دروازے سب کے لیے کھلے ہیں جو جب چاہے آسکتا ہے اور جب چاہے جاسکتا ہے اور ویسے بھی جہانگیر ترین نواز شریف سے بڑے مجرم نہیں۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے ترجمان مسلم لیگ نون مریم اورنگزیب نے کہا کہ پی ڈی ایم متحد ہے اے این پی کی جمہوریت کے لیے خدمات ہیں اور ہمیں ان کی علیحدگی کا دکھ ہے۔

مریم اورنگزیب نے امید ظاہر کی کہ اے این پی اپنے فیصلے پرنظرثانی کرے گی۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ سیاست میں بات چیت کے دروازے ہمیشہ کھلے رہتے ہیں۔

نون لیگ کی ترجمان نے کہا کہ سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کے انتخاب کے دوران دو پارٹیوں نے اتحاد کی خلاف ورزی کی اور دونوں نے ہی بلوچستان عوامی پارٹی سے ووٹ لے کر پی ڈی ایم کے اعتماد اور اتحاد کی نفی کی۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ فیصلہ پی ڈی ایم کا ہی تھا کہ سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر نون لیگ کا ہوگا۔

رہنما اے این پی امیرحیدر ہوتی نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شوکاز نوٹس دینے والوں نے خود اتحاد کو ختم کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ برابر نہ سمجھنے والوں سے بات چیت نہیں ہوسکتی۔

PML N

aitzaz ahsan

Pakistan Democratic Movement

PDM

Tabool ads will show in this div