ماؤ باغیوں کا بھارتی فوجیوں پر حملہ،22 فوجی ہلاک

حملے میں 32 فوجی زخمی بھی ہوئے
فائل فوٹو

بھارتی ریاست چھتیس گڑھ میں ماؤ باغیوں نے حملہ کرکے 22 بھارتی فوجیوں کو ہلاک کردیا۔

بھارتی خبر رساں ادارے ہندوستان ٹائمز کے مطابق 5 بھارتی فوجیوں کی لاشیں بروز ہفتہ 3 اپریل کو برآمد کی گئیں، جب کہ دیگر 17 لاشیں اتوار کے روز برآمد کی گئیں۔

رپورٹ کے مطابق ماؤ باغیوں نے ضلع بیجا پور اور سُکما کی سرحد کے ساتھ واقع ترام کے جنگلات میں موجود اس وقت فوجیوں پر حملہ کیا، جب وہ پیٹرولنگ کیلئے موجود تھے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق یہ رواں سال کا بھارتی فورسز کے خلاف سب سے بڑا حملہ ہے۔ حملے میں 32 اہلکار زخمی بھی ہوئے، جب کہ سپاہی تاحال لاپتا ہے۔

بھارتی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ اس حملے سے نیکسلائیٹ گوریلوں کی بڑھتی ہوئی استعداد اور مضبوطی کا بخوبی اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ماؤ نواز باغی 1967ء سے اپنے واضح کردہ حقوق اور آزادی کے حصول کیلئے جنگ لڑ رہے ہیں۔

مسلح تحریک اب تک بھارت کی آدھی ریاستوں کے 60 اضلاع میں پھیل چکی ہے، جہاں فورسز اور باغیوں میں متعدد جھڑپیں ہوتی رہتی ہیں۔

چھتیس گڑھ، کرناٹکا، اوڑیسہ، آندھرا پردیش، مہاراشٹرا، جھرکنڈ، بہار، اتر پردیش اور مغربی بنگال کی ریاستیں ان کارروائیوں کا مرکز سمجھی جاتی ہیں۔ چھتیس گڑھ اس جنگ کا مرکز بنا ہوا ہے۔

Indian Soldiers

NAXAL

Tabool ads will show in this div