وفاق کوایک ہفتےمیں کرونا ویکسین کی قیمت مقرر کرنے کاحکم

ویکسین درآمد کیلئے فارما کمپنیزکو اجات دینے سے متعلق سماعت
Sindh-High-Court-1 فوٹو: سماء ڈیجیٹل

سندھ ہائی کورٹ نے وفاقی حکومت کو ایک ہفتہ میں کرونا ویکسین کی قیمت مقرر کرنے کا حکم دے دیا۔

بدھ 31 مارچ کو ‎عدالت عالیہ میں کرونا ویکسین کی درآمد کے لیے نجی فارما کمپنیز کو اجازت دینے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی۔ اس دران فارما کمپنی کے وکیل اور ایڈیشنل اٹارنی جنرل کے درمیان سخت جملوں کا تبادلہ ہوا۔

ڈریپ کے وکیل نے بتایا کہ کابینہ آج کے اجلاس میں قیمت مقرر کرے گی۔ فارما کمپنی کے وکیل نے کہا کہ حکومت نے دھوکہ دہی کی ہے۔ پہلے امپورٹ کی اجازت دی پھر واپس لے لی اور ‎اب کہا جارہا ہے قیمت مقرر کی جائے گی۔

جسٹس امجد سہتو نے وفاق کے وکیل کو مخاطب کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ دنیا میں ویکسین لگ رہی ہے آپ کے پاس 10 لاکھ بھی نہیں۔ آپ تو کچھ بھی نہیں کر رہے کچھ تو کرو۔ قیمت مقرر کریں، لوگوں کو ویکسین تو لگنے دیں کیونکہ لوگ ویکسین کا انتظار کررہے ہیں۔

نجی کمپنی کو پرانی شرائط پرکرونا ويکسينز درآمدکرنے کی اجازت

‎ڈپٹی اٹارنی جنرل نے کہا کہ ہمیں مہلت دی جائے ہدایت لے کر بتاتے ہیں، جس پر عدالت نے وفاقی حکومت کو ایک ہفتہ میں کرونا ویکسین کی قیمت مقرر کرنے کا حکم دیا۔

عدالت نے آبزرویشن میں کہا کہ توقع ہے سنگل بینچ تمام معاملات 10 دن میں نمٹا دے گا۔ اہم نوعیت کے معاملات ہیں جلد فیصلہ ہونا چاہیے۔

واضح رہے کہ جمعہ 26 مارچ کو سندھ ہائی کورٹ نے کرونا ویکسینز درآمد کے لیے استثنیٰ واپس لینے کا سرکاری نوٹیفیکیشن معطل کرتے ہوئے درخواست گزار کمپنی کو پرانی شرائط پر ويکسينز درآمد کی اجازت دی تھی۔

CORONA VACCINE

Tabool ads will show in this div