راولپنڈی،تیرہ سالہ بچہ اغوا کے بعد قتل،لواحقین کا احتجاج

Pindi Child Murder Final Isb Pkg  22-11 راول پنڈی : راول پنڈی ميں اغوا کاروں نے بچے کو مار ڈالا، غم سے نڈھال محسن کے اہل خانہ احتجاج کے بعد تھک کر لاش گھر لے گئے۔ وزيراعليٰ پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے تھانہ صادق آباد کے ايس ايچ او کو معطل کردیا۔ راول پنڈی کا تیرہ سال کا محسن ہفتے کی رات سے لاپتا تھا، گھر والوں کے ڈھونڈنے پر وہ تو نہ ملا، تاہم تاوان کی پرچی مل گئی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ اغوا کاروں نے بچے کے والد سے اسی لاکھ روپے تاوان طلب کیا تھا اور مطالبہ پورا نہ ہونے پر بچے کو قتل کر دیا۔ بچے کی لاش ڈھوک کالا خان  قبرستان سے ملی، جسے پوسٹ مارٹم کیلئے ڈی ایچ کیو اسپتال بھجوا دیا گیا، پولیس اغوا کروں کا سراغ لگانے کیلئے مختلف پہلو ئوں پر تفتیش کر رہی ہے، جب کہ فرائض میں غفلت برتنے پر تھانہ صادق آباد کے سب انسپکٹر ظفر کو معطل کر دیا گیا۔ معصوم بچے کی ہلاکت کے خلاف ورثاء اور اہل علاقہ نے ایکپریس وے پر پہنچ کر احتجاج کیا، جس سے گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں اور مسافروں کو اذیت ناک صورت حال کا سامنا کرنا پڑا۔ اغوا کاروں کی گرفتاری اور متاثرہ خاندان کو انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی پر مظاہرین منتشر ہوگئے۔ سماء

MINOR BOY

Tabool ads will show in this div