اسپتالوں پر کنٹرول کا وفاقی فیصلہ غیرقانونی ہے،سندھ حکومت

وفاق کو خط لکھنے کا فیصلہ
فوٹو: فیس بک
فوٹو: فیس بک
فوٹو: فیس بک

سندھ حکومت نے وفاق کی جانب سے صوبے کے 3 بڑے اسپتالوں کو اپنی تحویل میں لینے کے فیصلے کو عدالتی فیصلے کے برعکس قرار دے دیا۔

اس حوالے سے وزيراعلیٰ سید مراد علی شاہ کی زيرصدارت اجلاس ميں وفاقی حکومت کو خط لکھنے کا فیصلہ کرلیا گيا ہے۔

وزیر اعلیٰ سندھ اجلاس سے خطاب کے دوران تین بڑے اسپتالوں بشمول جناح اسپتال، قومی ادارہ برائے امراض قلب اور قومی ادارہ برائے امراض اطفال کو بورڈ آف گورنرز کے ذریعے کنٹرول کرنے کو عدالتی فیصلے کے برعکس قرار دیتے ہوئے کہا کہ وفاق کے اس فيصلےسےعلاج کی سہولتيں متاثرہونگی۔

جناح اسپتال کراچی کا کنٹرول سندھ حکومت سے چھن گیا

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت نے ان تينوں بڑے اسپتالوں کو بہترین ادارہ بنانے کے لیے بڑی محنت کی ہے اور سن 2011 سے اب تک تمام اخراجات بھی برداشت کر رہی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ان اسپتالوں میں بلوچستان، پنجاب ، خبیبر پختونخوا اور سندھ بھر سے مریض آتے ہیں جنہيں مفت اور بہترين علاج کی سہولتيں فراہم کی جاتی ہيں۔

وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کے پاس ان اسپتالوں کو چلانے کے لیے بہترین پلان موجود ہے اور اگر یہ اسپتال وفاق کے پاس گئے تو علاج معالجے کی جاری سہولیات متاثر ہوں گی۔

sindh govt

cm sindh

MURAD ALI SHAH

pti govt

Tabool ads will show in this div