آوارہ کتوں کے حملے، حیدرآباداور جامشورو میں 1200سے زائد کیسز

دادو اورخیرپور میں 9بچوں سمیت 24افراد زخمی
Mar 19, 2021

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/03/DOG-BOTE-OVER-Pkg.mp4"][/video]

سندھ  میں کتوں کے کاٹنے کے واقعات تھم نہ سکے، دادو ميں 5 بچوں سميت 15 افراد اور خيرپور ميں 4 بچوں سميت 9 افراد کو آوارہ کتوں نے کاٹ ليا۔ حیدرآباد اور جامشورو میں ڈھائی ماہ کے دوران 1200 سے زائد کیس رپورٹ ہوچکے ہيں۔

 سندھ ميں کتوں کے کاٹنے کے واقعات ميں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے، دادو ميں 5 بچوں سميت 15 افراد کتوں کے حملوں میں زخمی ہوگئے۔ متاثرہ افراد کو ڈی ایچ کیو اسپتال لایا گیا۔ خيرپور ميں 4 بچوں سميت 9 افراد کو بھی کتوں نے کاٹ لیا۔

حيدر آباد ميں بھی صورتحال جوں کی توں ہے، 6 مارچ کی رات لطيف آباد ميں آوارہ کتے نے دکان کے باہر بيٹھی خاتون پر حملہ کيا، اس کی گود ميں بيٹھے بچے کو بری طرح کاٹا، لوگوں نے بھگايا تو جاتے ہوئے اس نے ايک اور بچے کو کاٹ ليا۔

ڈھائی ماہ کے دوران حيدرآباد ميں ايک ہزار کے قريب افراد کتوں کے کاٹنے سے زخمی ہوچکے ہيں۔

علاقہ مکینوں کا کہنا ہے کہ آوارہ کتوں کے بچوں پر حملے زیادہ ہوگٸے ہیں، بلدیہ والے اور متعلقہ محکمے کے افسران کو جاگنا ہوگا۔

سول اسپتال انتظامیہ کے اعداد و شمار تشويشناک صورتحال کا پتا ديتے ہيں۔ انچارج ریبیز ویکسینیشن ڈاکٹر شاہد جونیجو کا کہنا ہے کہ رواں سال کے ڈھاٸی ماہ میں جامشورو اور حیدرآباد میں 1515 کتوں کے کاٹنے کے نئے کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ 21-2020ء میں مجموعی طور پر 4 ہزار 500 سے زیادہ زخمیوں کو ویکسین لگا چکے ہیں۔

شہريوں کا کہنا ہے کہ سندھ ميں کتوں کی بہتات نے جينا اجيرن کرديا ہے، انتظاميہ ان سے جلد چھٹکارے کے اقدامات کرے۔

Tabool ads will show in this div