مارشل لاء کے چاروں ادوار بے مثال تھے،چوہدری شجاعت حسین

وزیراعظم عوامی مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کریں
Shujaat فائل فوٹو: اے ایف پی

مہنگائی کا حال ديکھ کر چوہدری شجاعت حسين کو پرویز مشرف دور ياد آگيا۔ کہتے ہيں بيشک مارشل لاء سے اختلافات ہوسکتے ہیں ليکن مارشل لاء کے دور میں مہنگائی کے خاتمے کيلئے 2 ہفتوں میں اقدامات کئے تھے۔

سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ق کے سربراہ چوہدری شجاعت نے وزیراعظم سے اپیل کی کہ وہ عوامی مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کیلئے اداروں کو ہدایات جاری کریں، میٹنگز میں صرف سیاسی مسائل پر وقت ضائع نہ کیا جائے، اختلافات بھلا کر عوامی مسائل کے حل پر توجہ دی جائے۔

مہنگائی کا حال ديکھ کر چوہدری شجاعت کو پرویز مشرف دور ياد آگيا، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ مارشل لاء دور میں مہنگائی ختم کرنے کيلئے 2 ہفتوں ميں اقدامات کيے، بيشک مارشل لاء سے اختلافات ہوسکتے ہیں مگر مارشل لاء کے چاروں دور بے مثال تھے۔

سابق صدر پرویز مشرف کے دور میں چوہدری شجاعت حسین وزیراعظم رہے جبکہ زرداری دور میں چوہدری پرویز الٰہی نائب وزیراعظم کے عہدے پر رہے، مسلم لیگ ق پنجاب اور عمران خان کی وفاقی حکومت میں بھی اتحادی ہے۔

چوہدری شجاعت حسین کا مزید کہنا ہے کہ مارشل لاء دور میں مسائل پر اٹھائے گئے اقدامات آج بھی عوام کو یاد ہیں۔

پاکستان تحریک انصاف کی حکومت میں آٹا اور چینی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ چکے ہیں جبکہ دونوں اشیائے ضروریہ کے بحران پیدا ہوئے جس پر حکومت کی جانب سے کمیشن بھی بنائے گئے، تاہم قیمتیں کنٹرول نہ کی جاسکیں۔

IMRAN KHAN

Shujaat Hussain

Tabool ads will show in this div