حکومت گرانے کیلئے آخری دھکا ضرور دینگے، مریم نواز

جو بھی استعفوں پر راضی نہیں، اسے منایا جائیگا

مریم نواز شریف کہتی ہیں کہ حکومت گرانے کیلئے آخری دھکا ضرور دیں گے، استعفوں پر جو بھی راضی نہیں اسے منایا جائے گا، آئندہ کسی کو عوام پر مسلط نہیں ہونے دیں گے، کوئی الزام ثابت نہیں ہورہا، کیا نیب اب بیانات بھی جانچے گا؟۔

پاکستان مسلم لیگ ن کی اسٹریٹجک کمیٹی کا اجلاس اسلام آباد میں ہوا، جس میں مریم نواز شریف کے علاوہ دیگر اہم رہنماؤں نے شرکت کی، نواز شریف لندن جبکہ حمزہ شہباز لاہور سے ویڈیو لنک پر شریک ہوئے۔ اجلاس میں لانگ مارچ، استعفوں، آئندہ کی سیاسی حکمت عملی اور پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے کل ہونیوالے اجلاس سے متعلق لائحہ عمل پر تبادلہ خیال ہوا۔

رپورٹ کے مطابق مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف نے مسلم لیگ ن کے استعفوں کا اختیار مولانا فضل الرحمان کو دیدیا ہے۔ ذرائع کے مطابق نواز شریف کا کہنا ہے کہ اپنی جماعت کے تمام ارکان اسمبلی کے استعفے آپ کے حوالے کرنے کو تيار ہيں، کوئی مانے يا نہ مانے ہمارے استعفوں پر آپ فيصلہ کرسکتے ہيں۔

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز شریف نے کہا کہ الزام لگایا جاتا ہے کہ ن لیگ اداروں پر تنقید کرتی ہے، آج سب کو سمجھ آگیا ہوگا کہ اداروں پر تنقید اور اداروں پر حملے میں کیا فرق ہے، اگر آپ کو ووٹ نہیں ملے تو الیکشن کمیشن کا کیا قصور؟۔ ڈسکہ الیکشن کا حوالہ دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ دھاندلی کے باوجود عوام نے انہیں مسترد کردیا، قوم نے دیکھا کہ یہ کس طرح بیگ اٹھا کر بھاگ رہے تھے۔

مزید جانیے: نوازشریف نے استعفوں کا اختیار مولانافضل الرحمان کو دیدیا

مریم نواز نے دعویٰ کیا کہ کل معلوم ہوجائے گا کونسی جماعت کہاں کھڑی ہے، آواز اُٹھ رہی ہے تو سنی بھی جارہی ہے، آئندہ کسی کو عوام پر مسلط نہیں ہونے دیں گے۔

ن لیگی رہنماء نے یہ بھی کہا کہ اراکین پارلیمنٹ کے استعفوں سے متعلق کل پی ڈی ایم کا اجلاس بہ تاہم ہے، استعفوں پر جو بھی راضی نہیں اسے منایا جائے گا، حکومت کو گرانے کیلئے آخری دھکا ضرور دیں گے۔

نیب سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ قومی احتساب بیورو نے ذمہ داریاں اپنے آپ کو خود ہی سونپ دی ہیں، کوئی الزام ثابت نہیں ہو رہا، کیا نیب اب بیانات بھی جانچے گا؟، جیل والد کو ملنے گئی تو گرفتار کر لیا گیا، ابھی تک یقین نہیں آرہا کہ نیب کو مریم نواز کا خیال کیسے آگیا۔

یہ بھی پڑھیں:  مریم نواز کا جاوید لطیف کے بیان پر ردعمل

انہوں نے الزام لگایا کہ نیب نے لانگ مارچ سے روکنے کیلئے ضمانت کی منسوخی کی درخواست لکھی۔

سماء نے سوال کیا کہ سینیٹ چیئرمین الیکشن میں آپ کے ارکان پر شک کیا جارہا ہے۔ جس پر مریم نواز کا کہنا تھا کہ سب سینیٹرز نے یوسف رضا گیلانی کو ووٹ دیا، سب نے مہر یوسف رضا گیلانی کے نام پر لگائی ہے کوئی ابہام نہیں، کسی نے بھی سنجرانی صاحب کے نام پر مہر نہیں لگائی، نام پر لگی، ماتھے پر لگی یا ناک پر، مہر باکس کے اندر لگی تھی، پریزائیڈنگ افسر نے ناانصافی کرکے حکومتی اتحادی ہونے کا ثبوت دیا۔

MARYAM NAWAZ SHARIF

Pakistan Democratic Movement

Tabool ads will show in this div