آمدن سے زائد اثاثے: صفدرکی عبوری ضمانت 29مارچ تک منظور

نیب سے جواب بھی طلب کرلیا
Mar 08, 2021
[caption id="attachment_2208199" align="alignnone" width="800"]Capt Safdar فوٹو: آن لائن[/caption]

نیب کی جانب سے آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں طلبی پر لاہور ہائی کورٹ نے کیپٹن ريٹائرڈ صفدر کی عبوری ضمانت 29 مارچ تک منظور کرلی۔

پیر 8 مارچ کو کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے ضمانت کے لیے لاہور ہائی کورٹ سے رجوع کرتے ہوئے نیب لاہور کی جانب سے 10 مارچ کو طلبی کے نوٹس کو چیلنج کیا۔

درخواست ميں موقف اپنایا گیا کہ آمدن سے زائد اثاثوں کی انکوائری نیب پشاور میں بھی زیر التوا ہے اس لیے ایک ہی معاملہ پر 2 صوبوں میں انکوائری نہیں چل سکتی۔

آمدن سے زائد اثاثے: کيپٹن ریٹائرڈ صفدر نیب میں طلب

درخواست گزار کے مطابق سیاسی انتقامی کارروائی کی جا رہی ہے اور پہلے پولیس کی جانب سے دائر کیے گئے مقدمات بھی بھگت رہا ہوں۔ استدعا کی کہ عدالت نیب لاہور کو گرفتار کرنے سے روکنے کا حکم دے۔

عدالت نے عبوری ضمانت 29مارچ تک منظور کرتے ہوئے نیب سے جواب بھی طلب کرلیا۔

نیب کے بھجوائے گئے نوٹس میں کہا گیا تھا کہ کیپٹن ريٹائرڈ صفدر سندر انڈسٹریل اسٹیٹ کے قریب واقع فلورمل، مریم نواز کے نام پر موضع مال ميں اراضی، موضع بدوکی میں واقع 62 کنال 2 مرلہ اراضی، رائیونڈ میں 200 کنال اراضی، تحصیل رائیونڈ میں 42 کنال اراضی، موضع سلطان کے سندر روڑ میں مریم نواز کے نام 109 ایکڑ اراضی، جاتی امرا کے قريب ایگریکلچر فارم اور جیو اسٹیٹ فارم ہاؤس کی مکمل تفصیلات ہمراہ لائيں۔

نوٹس ميں کیپٹن صفدر کو اہل خانہ اور مبینہ فرنٹ مین کے ناموں سمیت دیگر جائیدادوں کی بھی مکمل تفصیلات ساتھ لانے کی ہدايت کی گئی ہے۔

CAPTAIN SAFDAR AWAN

Tabool ads will show in this div